سویڈن، ویزا گائیڈ بک چیپٹر12

سویڈش ویزے

سویڈن شینگن ممالک میں شامل ہے لہٰذا اس معاہدے کے تحت سویڈش ویزا حاصل کرنے والے افراد دیگر شینگن ممالک میں بھی داخل ہو سکتے ہیں۔ سویڈش ایمبیسی درج ذیل قسم کے ویزے جاری کرتی ہے۔
٭ وزٹ ویزا (VISIT VISA)
٭ بزنس ویزا (BUSINESS VISA)
٭ فیملی ملاپ (RESIDENCE PERMIT FAMILY REUNIFICATION)
٭ سٹڈی ویزا (RESIDENCE PERMIT FOR STUDIES VISA)
٭ ای ای اے ویزا (EEA VISA)
٭ ورک پرمٹ ویزا (WORK PERMIT VISA)

ویزا درخواست کہاں جمع کرائیں گے؟

ویزا درخواستیں وی ایف ایس کے ذریعے جمع ہوتی ہیں۔ ہر قسم کے ویزا فارم بھی وی ایف ایس کی ویب سائٹ پر دستیاب ہیں،وہیں سے آپ اپوائنٹمنٹ لے کرویزا درخواست جمع کرانے جائیں گے۔ویزا فارم ایمبیسی کی ویب سائٹ سے بھی ڈاو¿ن لوڈ کئے جا سکتے ہیں۔ www.swedenabroad.se/islamabad

وزٹ ویزا

سویڈن کی ایمبیسی سیروتفریح‘ کسی عزیز رشتہ دار سے ملنے‘ کسی نمائش یا سیمینار میں شرکت سمیت دیگر مقاصد کے لیے عارضی وزٹ کرنے کے خواہشمند افراد کو 90 روز تک کا شینگن ویزا جاری کرتی ہے۔ اس ویزا پر اٹلی‘ آسٹریا‘ فرانس‘ لکسمبرگ‘ بلجیم‘ ناروے سمیت تمام شینگن ممالک میں جانے کی اجازت ہو گی۔ شینگن کلب میں شامل دیگر ممالک کی طرح سویڈن نے بھی اس ویزا کے اجراءکے لیے سپانسر شپ کی بنیادی شرط رکھی ہے اور سپانسر پر مکمل ذمہ داری عائد کی ہے۔ اہلیت کے لیے دیگر شرائط میں امیدوار کے پاس اخراجات کے لیے وافر رقم کی موجودگی اور پاکستان کے ساتھ مضبوط رشتہ ہے جس کی بناءپر واپسی یقینی ہو سکے۔ ویزا روٹین میں ایک ماہ کے عرصہ میں جاری ہوتا ہے لہٰذا اپنا پروگرام اس لحاظ سے ترتیب دیں۔ ویزا کے لیے ان دستاویزات کے ساتھ اپلائی کریں گے۔
٭ مکمل پر شدہ شینگن ویزا فارم نمبر +119031 فیملی اپینڈکس ڈی فارم نمبر 201031 (دونوں فارموں کی ایک ایک فوٹو کاپی بھی ساتھ لگائیں گے۔)
٭ سویڈن سے بھیجا گیا دعوتی اسپانسر شپ جو کہ اپینڈیکس ای فارم نمبر 213031 پر ہو‘ بمعہ 2فوٹو کاپی۔
٭ فیس جمع کرانے کی رسید۔
٭ اصل پاسپورٹ+شناختی کارڈ۔
٭ پاسپورٹ کے دو پہلے صفحات کے علاوہ اگر کوئی ویزا لگا ہو تو ان صفحات اور شناختی کارڈ کی فوٹوکاپی۔
٭ 2 پاسپورٹ سائز تازہ تصاویر (چہرہ واضح ہو اور ہلکا بیک گراﺅنڈ استعمال کیا گیا ہو۔)
٭ سپانسر کے پاپولیشن رجسٹر میں اندراج کی کاپی۔
٭ سپانسر کے ٹیکس کی ادائیگی کا سرٹیفکیٹ۔
٭ اگر سپانسر سویڈش شہری نہیں بلکہ رہائشی پرمٹ ہولڈر ہے تو اس کے پاسپورٹ کی فوٹو کاپی۔
٭ امیدوار ملازمت کرتا ہے تو چھٹی کا سرٹیفکیٹ/اپنا کاروبار ہے تو اس کی رجسٹریشن اور ٹیکس کا سرٹیفکیٹ۔
٭ دورہ کے دوران اخراجات کے لیے تین سوسترکرونا روزانہ کے حساب سے رقم کی موجودگی کا سرٹیفکیٹ۔
ثبوت (اس کے لیے گزشتہ 6 ماہ کی بینک سٹیٹمنٹ اور جائیداد کے کاغذات ساتھ لگائیں گے۔)
٭ کنفرم ریٹرن ائیر ٹکٹ۔
٭ شینگن ممالک کے لیے کارآمد 30 ہزار یورو کی ہیلتھ انشورنس پالیسی۔
ویزا درخواست وی ایف ایس گلوبل کے دفتر میں جمع کرانے پر آپ کو انٹرویو کا وقت دیا جائے گا جس کے لیے ایمبیسی جانا ہو گا۔ وہاں فنگر پرنٹس اور ایک فوٹو لی جائے گی۔ اس دوران کسی دستاویز کی ضرورت ہوئی تو ویزا آفس آپ کو آگاہ کرے گا۔

بزنس ویزا

بزنس ویزا کے لیے درج ذیل کاغذات کے ساتھ اپلائی کریں۔
٭ مکمل پر شدہ شینگن ویزا فارم نمبر +119031 اپینڈیکس اے فارم نمبر: +210021 فیملی اپینڈیکس ڈی فارم نمبر 201031 (پرشدہ فارموں کی ایک ایک فوٹی کاپی بھی لف کریں۔)
٭ اصل پاسپورٹ (پرانا ہو تو وہ بھی منسلک کریں) + شناختی کارڈ۔
٭ پاسپورٹ کے پہلے دو کے علاوہ ویزوں والے صفحات اور شناختی کارڈ کی فوٹوکاپیاں۔
٭ 2 پاسپورٹ سائز تازہ تصاویر (ہلکے بیک گراﺅنڈ کے ساتھ‘ سر‘ آنکھیں اور کان بالکل واضح ہوں۔)
٭ آپ کے ادارہ/کمپنی کی طرف سے (آپ کے علاوہ کسی اور بااختیار شخص کا دستخط شدہ) لیٹر جس میں بتایا گیا ہو کہ آپ کمپنی کی طرف سے بزنس ٹور پر جا رہے ہیں۔
٭ کسی سویڈش کمپنی کا دعوتی خط جس میں دورے کا مقصد اور اس کے لیے درکار مدت بیان کی گئی ہو۔
٭ سویڈش کمپنی کا ان کارپوریشن (Incorporation) سرٹیفکیٹ۔
٭ امیدوار کے بینک اکاﺅنٹ کی 6 ماہ اور اس کی کمپنی کے اکاﺅنٹ کی گزشتہ 1سال کی سٹیٹمنٹ۔
٭ امیدوار کی کمپنی کا رجسٹریشن سرٹیفکیٹ اور چیمبر آف کامرس کی جانب سے سفارشی خط۔
٭ کنفرم ریٹرن ائیر ٹکٹ۔
30 ہزار یورو مالیتی ٹریول ہیلتھ انشورنس پالیسی جو کہ شینگن ممالک کی منظورشدہ انشورنس کمپنیوں مثلاً آدم جی‘ یونیورسل سینچری‘ اے آئی سی اور پکک وغیرہ سے کروائی جائے گی‘ مکمل فہرست پچھلے ابواب میں دی جا چکی ہے۔

اہم سوالات

س: میں صرف سویڈن جانا چاہتا ہوں‘ اس کے لیے بھی شینگن ویزا ہی اپلائی کرنا پڑے گا؟
ج: جی ہاں‘ سویڈن شینگن ممالک میں شامل ہونے کے بعد دیگر رکن ممالک کی طرح تمام شینگن ویزے ہی جاری کرتا ہے۔ اس پر آپ کسی اور ملک میں نہیں جانا چاہتے تو مت جائیں کیونکہ یہ ضروری نہیں۔
س: میں 3 ماہ کا شینگن ویزا حاصل کر کے سپین گیا اور اب واپس پاکستان میں ہوں‘کیا فوری طور پر سویڈش ویزا کے لیے اپلائی کر سکتا ہوں؟
ج: شینگن ایریا میں آپ ہر چھ ماہ میں صرف تین مہینے بطور وزیٹر رہ سکتے ہیں اور یہ مدت آپ کی انٹری سے شروع ہوتی ہے لہٰذا اب آپ 3 ماہ بعد شینگن ویزہ کے لیے اپلائی کر سکیں گے۔
س: اگر میں وزٹ کے دوران بیمار ہو گیا تو علاج معالجہ کی ذمہ داری کس کی ہو گی؟
ج: شینگن ممالک پر وزیٹر کو میڈیکل سہولت فراہم کرنے کی ذمہ داری عائد نہیں ہوتی۔ اس مقصد کے لیے ٹریول ہیلتھ انشورنس کرائی جاتی ہے جس کے تحت آپ کا علاج ہو گا۔
س: سویڈن کا مستقل رہائشی ویزا رکھنے والوں کو شینگن ویزے کی ضرورت ہو گی؟
ج: نہیں‘ مستقل رہائشی ویزا رکھنے والے افراد کے پاسپورٹ پر سٹیکر لگا ہوتا ہے جو کہ اس بات کا اجازت نامہ ہوتا ہے کہ وہ آزادی کے ساتھ پورے شینگن علاقے میں گھوم سکتے ہیں۔
س: میرے عزیز کی ویزا درخواست سپانسر لیٹر کے باوجود کیوں مسترد کر دی گئی؟
ج: ایک عام وجہ یہی ہوتی ہے کہ ویزا افسر تمام دستاویزات دیکھنے کے بعد مطمئن نہیں ہو پاتا کہ درخواست گزار ویزا کی مدت ختم ہونے پر واپس آ جائے گا۔ دوسری وجہ یہ ہو سکتی ہے کہ سویڈن میں متوقع قیام کے دوران سپانسر پوری ذمہ داری نہ لے سکتا ہو یا پھر امیدوار کے پاسپورٹ کا شینگن انفارمیشن سسٹم (SIS) میں اندراج ہو۔ بہر کیف مکمل وجوہات جاننےکے لیے امیدوار ویزا سیکشن کو درخواست بھیجے۔
س: کیا دعوتی خط نوٹری پبلک یا پولیس سے تصدیق کرا کر جمع کرانا ہو گا؟
ج: نہیں‘ اس کی تصدیق سویڈش مائیگریشن بورڈ خود کرتا ہے۔
س: کیا 3 ماہ کے وزٹ ویزے میں سویڈن میں قیام کے دوران توسیع ہو سکتی ہے؟
ج: جی نہیں‘ اگر آپ مزید قیام کرنا چاہتے ہیں تو مائیگریشن بورڈ کے آفس میں ریذیڈنٹ پرمٹ کی درخواست دیں۔ اس کے لیے ایک ہزار کرونا فیس جمع کرانا پڑے گی۔
س: ایمبیسی کے کسی افسر کی شکایت کس سے کی جا سکتی ہے؟
ج: کسی افسر نے ڈیوٹی کے دوران قانونی خلاف ورزی کی ہو تو آپ مکمل ثبوت اور تفصیلات کے ساتھ سویڈش دفتر خارجہ کے قونصلر افیئرز اینڈ سول لاءسیکشن کو اپنی تحریری شکایت بھیجیں گے۔

sweden study visa

سویڈن میں حصول تعلیم

آپ سویڈن میں تعلیم حاصل کرنا چاہتے ہیں تو سب سے پہلے اپنے کورس اور پھر تعلیمی ادارے کا انتخاب کریں۔ اس مقصد کے لیے سرکاری سویڈش ویب سائٹ Studyinsweden.se آپ کی ہر طرح سے مدد کرے گی۔ اس کے ذریعے آپ متعلقہ کالج یا یونیورسٹی کے انٹرنیشنل سٹوڈنٹ آفس تک پہنچ سکیں گے اور داخلہ کے لیے تمام معلومات حاصل کر کے انرولمنٹ یا داخلہ کرا پائیں گے۔

سٹڈی ریذیڈنس پرمٹ

کوئی بھی شخص جو سویڈن کے کسی کالج یا یونیورسٹی میں 3 ماہ سے زائد عرصہ کے لیے پڑھنا چاہتا ہے تو اس کے لیے رہائشی پرمٹ کی ضرورت ہو گی جس کے لیے پہلی بار اپنے ملک میں رہتے ہوئے ہی اپلائی کیا جاتا ہے لیکن اس سے پہلے کالج/یونیورسٹی میں آپ کی رجسٹریشن یا داخلہ ہونا ضروری ہے یعنی کہ “Acceptance letter” موصول ہو جائے۔ پہلی بار ایک سال کے لیے پرمٹ جاری ہو گا جس میں بعد ازاں توسیع ہوتی رہے گی۔

اہلیت

(i کالج یا یونیورسٹی داخلہ دینے پر رضامندی ظاہر کر دے۔
(ii امیدوار اپنے اخراجات خود برداشت کر سکے‘ سویڈش مائیگریشن بورڈ تعلیمی رہائشی پرمٹ کے لیے کسی سپانسر کی طرف سے ذمہ داری قبول نہیں کرتا لہٰذا امیدوار کے اپنے ذاتی اکاﺅنٹ میں 7300 کرونا ماہانہ کے حساب سے کم از کم ایک سال کی رقم پاکستانی روپوں میں موجود ہونی چاہیے۔

کب اپلائی کریں؟

کالج یا یونیورسٹی کا لیٹر ملتے ہی آپ کو فیڈیکس کے ذریعے سٹڈی ریذیڈنس پرمٹ کے لیے اپلائی کر دینا چاہیے کیونکہ ایمبیسی ضروری کارروائی کے بعد کیس سویڈن میں مائیگریشن بورڈ کو بھجوائے گی جہاں رہائشی پرمٹوں کے کیسوں کا رش ہوتا ہے۔ بورڈ اگست‘ ستمبر میں شروع ہونے والے تعلیمی کورسز کے لیے ترجیحاً پرمٹ جاری کرتا ہے۔ بورڈ کو پرمٹ کے بارے میں فیصلے میں اوسطاً 3 ماہ لگتے ہیں تاہم کوشش کی جاتی ہے کہ کورس شروع ہونے سے پہلے پرمٹ جاری ہو سکے۔ بورڈ کے فیصلے کے بعد کیس پاکستان میں واپس سویڈش ایمبیسی کے پاس آتا ہے جو کہ ویزا جاری کر کے پاسپورٹ واپس کرتی ہے۔

سٹڈی ویزا اپلائی کرنے کے لیے درکار دستاویزات

٭ پرشدہ درخواست فارم کے 2 سیٹ صحیح اور مکمل۔ (فارم نمبر 105031) اور ساتھی درخواست دہندہ اگر ہے تو (فارم نمبر 135011)۔
٭ جمع شدہ فیس کی رشید۔
٭ 2 پاسپورٹ سائز رنگین تصاویر مکمل چہرے کے ساتھ (آپ کی نظریں براہ راست کیمرہ کی طرف ہوں)۔ ہلکے بیک گراﺅنڈ میں‘ جو چھ ماہ سے زیادہ پرانی نہ ہوں۔ آپ کی اچھی مطابقت رکھتی ہوں‘ ننگے سر جہاں کوئی خاص مذہبی وجوہ نہ ہوں۔
٭ اصل پاسپورٹ اور قومی شناختی کارڈ (واپس کر دیئے جائیں گے) ۔
٭ پاسپورٹ کے پہلے دو صفحات اور قومی شناختی کارڈ کی دو دو فوٹو کاپیاں۔
٭ سویڈش کالج/یونیورسٹی کی طرف سے منظوری کا خط۔ اصل معہ دو فوٹوکاپیاں۔ اصل خط
واپس کر دیا جائیگا۔ (سٹڈی فل ٹائم ہونی چاہیے)۔
٭ رخصتی کا سرٹیفکیٹ‘ غیرحاضری‘ تعلیم حاصل کرنے کی چھٹی (جہاں ضروری ہو) اصل معہ فوٹوکاپی۔
٭ آپ کے ذاتی بینک اکاﺅنٹ کی سٹیٹمنٹ کی دو کاپیاں (دونوں اصل) جو اس بات کا ثبوت ہوں کہ آپ کے پاس تمام تعلیمی مدت کے اخراجات کے لیے درکار کافی رقم موجود ہے۔ (یہ ثبوت کہ آپ اپنے اخراجات کو برداشت کر سکتے ہیں‘ آپ کو لازماً فراہم کرنا ہے‘ مثال کے طور پر بینک کے اثاثے کی شکل میں‘ تحریری ثبوت جو تصدیق کرے کہ آپ کو سکالرشپ (وظیفہ) ملا ہوا ہے یا کسی دوسرے یکساں طریقے کی صورت میں)۔ آپ کو ظاہر کرنا ہے کہ تہتر سو کرونا ماہانہ‘ سال کے 10 مہینوں کے حساب سے‘ ہمراہ جانے والے درخواست دہندہ کے لیے بحساب 3500 کرونا ماہانہ اور ہر ہمراہ جانے والے بچے کے لیے SEK2100 سال کے 12 مہینوں کے لیے آپ کی صوابدید پر دستیاب ہوں گے۔
٭ ایسے طلباءکو جو ایک سال سے کم عرصہ کے لیے یعنی ایک یا دو سمیسٹرز کے لیے‘ ریذیڈنس پرمٹ کی درخواست دے رہے ہیں‘ یکم فروری 2007ءسے ہیلتھ انشورنس لینا ہو گی جو ہنگامی اور دوسری اقسام کی طبی امداد‘ ہسپتال میں داخلے اور طبی وجوہات کی بناءپر وطن واپسی کے 30,000 یورو تک کے اخراجات کو کور کرے۔
نوٹ: درخواست جمع ہونے کے بعد آپ کو انٹرویو کی تاریخ اور وقت سے آگاہ کیا جائے گا۔ انٹرویو کرنے کے بعد ویزا سیکشن آپ کا کیس پرمٹ کی منظوری کے لیے سویڈش مائیگریشن بورڈ کو بھیج دے گا جو کہ اس کا جائزہ لے کر فیصلہ کرے گا اور ایمبیسی کو واپس بھجوائے گا۔

اہم سوالات

س: رہائشی پرمٹ کے بارے میں مائیگریشن بورڈ کا فیصلہ کتنے دنوں میں ایمبیسی تک پہنچتا ہے؟
ج: مائیگریشن بورڈ جس دن فیصلہ ہوتا ہے اسی روز ای میل یا فیکس کے ذریعے متعلقہ ایمبیسی کو آگاہ کر دیتا ہے جو بعد ازاں امیدوار کو مطلع کرتی ہے۔
س: مجھے مقررہ مدت میں ایمبیسی فیصلے سے آگاہ نہ کرے تو کیا کروں؟
ج: آپ درخواست دیتے وقت تسلی کر لیں کہ درست پتہ اور فون نمبر دے رہے ہیں جس پر آپ کو فون یا ڈاک مل سکتی ہے۔ بعض دفعہ روٹین ورک میں ایمبیسی میں بھی کچھ تاخیر ہو سکتی ہے لہٰذا آپ ویزا سیکشن سے گاہے بگاہے رابطہ کرتے رہیں۔
س: کیا مجھے فیصلہ انگریزی میں مل سکتا ہے؟
ج: نہیں‘ فیصلہ صرف سویڈش زبان میں ہی جاری کیا جا سکتا ہے‘ ٹرانسلیشن آپ کو خود کرانا ہو گی۔
س: سویڈن میں غیرملکی ڈرائیونگ لائسنسوں کے بارے میں کیا قوانین ہیں؟
ج: اس کے لیے آپ سویڈن میں ٹرانسپورٹ ایجنسی سے فون نمبر: 0771-171819 پر رابطہ کریں گے جو کہ آپ کی مکمل رہنمائی کرے گی۔
س: میں سٹڈی پرمٹ پر سویڈن آیا ہوں‘ مجھے میڈیکل کی سہولت کب ملے گی؟
ج: ٹیکس آفس میں پاپولیشن رجسٹر میں درج ہونے کے بعد آپ کو سرکاری سطح پر علاج معالجے کی سہولت دستیاب ہو گی۔
س: کیا میں پڑھائی کے دوران کام کر سکتا ہوں؟
ج: جی ہاں‘ آپ ہفتے میں 20 گھنٹے کام کر سکتے ہیں جبکہ چھٹیوں میں باقاعدہ 8 گھنٹے روزانہ کام کی اجازت ہوتی ہے تاہم تبادلے کے طور پر آنے والے طلباءفل ٹائم سٹڈی کے معاہدہ پر سویڈن آتے ہیں‘ اس لیے وہ قانوناً کام نہیں کر سکتے۔

swedish work permit

ورک پرمٹ

یورپی یونین کے علاوہ کسی اور ملک کے شہری جو کہ سویڈن میں 3 ماہ سے زائد عرصہ کام کرنا چاہتے ہوں‘ ان کو اس مقصد کے لیے ورک پرمٹ حاصل کرنا ہو گا جو کہ سویڈش مائیگریشن بورڈ جاری کرتا ہے۔ ایسے افراد جو کسی کمپنی کی طرف سے محض ٹریننگ حاصل کرنے کے لیے آئے ہوں‘ اس کا عرصہ 3 ماہ سے زیادہ ہو تو ان کو بھی ورک پرمٹ حاصل کرنا پڑے گا۔ تاہم خود روزگار والے افراد یعنی کہ بزنس مین جو کہ اپنی کمپنی یا کاروبار شروع کریں ان کو ورک پرمٹ کی ضرورت نہیں ہو گی ان کو صرف رہائشی پرمٹ حاصل کرنا ہو گا۔ یاد رہے کہ ورک پرمٹ سے پہلے رہائشی پرمٹ ملنا ضروری ہے۔

ورک پرمٹ کیلئے اہلیت

٭ سویڈن میں نوکری کی باقاعدہ پیشکش ہو۔
٭ اس ملازمت سے کم از کم 13 ہزار کرونا ماہانہ آمدن ہو جس سے اپنے اخراجات آسانی سے چلا سکیں اور ٹیکس ادا کر سکیں۔
٭ کمپنی کے مالک نے آپ کو ملازمت دینے سے قبل سویڈن اور یورپی یونین میں 10 روز تک اس کا اشتہار دیا ہو۔
٭ جاب کے لیے شرائط اور مراعات سویڈش معاہدوں کے مطابق ہوں۔
٭ متعلقہ شعبہ کی لیبر یونین سے اس ملازمت کے معاہدہ سے متعلق تبصرہ لیا گیا ہو۔
ورک اینڈ ریذیڈنس پرمٹ کیلئے کہاں اپلائی کیا جائے؟
آپ ورک پرمٹ کے لیے اپنے ملک یعنی پاکستان میں رہتے ہوئے ہی اپلائی کریں گے جس کے لیے فیڈیکس سینٹر پر جانا ہو گا۔ یاد رہے کہ سویڈن میں زیرتعلیم غیرملکی طلباءاور وہاں آباد پناہ گزین ورک پرمٹ کے لیے سویڈن میں براہ راست مائیگریشن بورڈ میں اپلائی کر سکتے ہیں۔ آپ کے بیوی بچے بھی آپ کے ساتھ ورک پرمٹ کے لیے اپلائی کر سکتے ہیں اور وہاں آپ کے ساتھ رہ سکتے ہیں۔

پرمٹ کی مدت

اگر ملازمت عارضی ہے تو اس کی مدت کے حساب سے ورک اور رہائش کے پرمٹ جاری ہوں گے تاہم ایک بار زیادہ سے زیادہ 2سال کا پرمٹ دیا جاتا ہے پھر اس میں ملازمت جاری رہنے کی صورت میں توسیع ہوتی رہتی ہے۔
ملازمت کی تبدیلی یا منسوخی
سویڈن میں غیرملکیوں کو عارضی ملازمتیں ہی ملتی ہیں۔ اگر ملازمت منسوخ ہو جائے تو آپ کو 3 ماہ کے اندر اندر نئی نوکری ڈھونڈنا ہو گی وگرنہ ریذیڈنس پرمٹ منسوخ کر دیا جائے گا۔ اس کے ساتھ ہی ورک پرمٹ خودبخود ختم ہو جاتا ہے۔ مزید برآں پہلے دو سال میں نوکری یا شعبہ تبدیل کرنا پڑے تو اس کے لیے آپ نئے ورک پرمٹ کے لیے اپلائی کریں گے تاہم 2سال بعد اس طرح کی صورتحال کا سامناہو تو نئے ورک پرمٹ کی ضرورت نہیں ہو گی بلکہ 2سال بعد پرمٹ میں توسیع کراتے رہیں گے۔

ورک پرمٹ اپلائی کرنے کیلئے درکار دستاویزات

فیڈیکس پر آپ اپنی درخواست خود جمع کرائیں اور مندرجہ ذیل کاغذات ساتھ لے کر جائیں۔
٭ مکمل پرشدہ درخواست فارم کے دو سیٹ (فارم نمبر103031)
٭ فیس جمع کروانے کی رسید۔
٭ اصل پاسپورٹ اور شناختی کارڈ (واپس کر دیئے جائیں گے)
٭ 2پاسپورٹ سائز رنگین تصاویر مکمل چہرے کے ساتھ (آپ کی نظریں براہ راست کیمرہ کی طرف ہوں) ہلکے بیک گراﺅنڈ میں‘ جو چھ ماہ سے زیادہ پرانی نہ ہوں۔ آپ کی اچھی مطابقت رکھتی ہوں‘ ننگے سر جہاں کوئی خاص مذہبی وجوہ نہ ہوں۔
٭ پاسپورٹ کے پہلے دو صفحات اور قومی شناختی کارڈ کی دو دو فوٹو کاپیاں۔
٭ سویڈن میں ملازمت کی تحریری پیشکش فارم‘ یہ فارم آپ کا آجر‘ ینشنل لیبر مارکیٹ بورڈ کی ویب سائٹ www.ams.se سے حاصل کر سکتا ہے۔ کائنٹی لیبر بورڈ سے منظوری کے بعد آپ کا آجر یہ فارم آپ کو روانہ کرے تاکہ آپ اسے اپنی درخواست کے ساتھ منسلک کریں۔
٭ آپ کا آجر آپ کی تنخواہ‘ انشورنس کوریج اور ملازمت کے دیگر قواعد کی گارنٹی دے‘ جو کم از کم مشترکہ معاہدہ یا سویڈش پیشہ وارانہ قوانین کی برانچ آف ٹریڈ کے برابر ہو۔
٭ آپ کے لیے سویڈن میں رہائش کا بندوبست ہو۔
٭ آپ پوری طرح تیار ہوں کہ مدت ملازمت ختم ہونے کے بعد آپ سویڈن چھوڑ دیں گے۔ اس کے لیے بیان حلفی دینا ہو گا۔
نوٹ: درخواست کی وصولی کے بعد آپ کو انٹرویو سے متعلق تاریخ اور وقت کے بارے میں آگاہ کیا جائے گا۔ انٹرویو کی مدت انتظار کا وقت زیادہ سے زیادہ 2سے 4ہفتہ تک ہے۔ انٹرویو کے بعد آپ کی درخواست فیصلہ کے لیے سویڈش مائیگریشن بورڈ کو ارسال کر دی جائے گی۔

سرمایہ کاروں کیلئے رہائشی پرمٹ

اگر آپ کاروباری شخصیت ہیں اور سویڈن میں اپنا کاروبار بڑھانے یا نیا منصوبہ شروع کرنے یا کسی کے کاروبار میں پارٹنر بننے کے خواہشمند ہوں تو آپ کو ورک پرمٹ کی ضرورت نہیں ہے بلکہ صرف “Residence Permit” کے لیے اپلائی کریں گے جوکہ شروع میں ایک سال یا پھر زیادہ سے زیادہ 2سال کیلئے جاری ہو گا بعد ازاں اس کی تجدید ہوتی رہے گی۔ اس کے لیے آپ پاکستان میں رہتے ہوئے ہی درخواست دیں گے۔

اہلیت

آپ ثابت کر سکیں کہ
٭ کم از کم کمپنی کے 50فیصد حصہ کے مالک ہیں۔
٭ کاروبار کا تجربہ رکھتے ہیں اور نیا منصوبہ باآسانی چلا سکتے ہیں۔ ٭ متوقع کاروبار کا باقاعدہ پلان موجود ہے جو کہ منافع بخش ہے۔
٭ انگریزی یا سویڈش زبان میں مہارت رکھتے ہیں۔
٭ معقول رقم کا بندوبست ہے اور پہلے دو سال اپنے اور فیملی کے اخراجات بھی باآسانی چلا سکتے ہیں۔

پرمٹ حاصل کرنے کیلئے طریقہ کار

آپ فیڈیکس کے ذریعے سویڈش ایمبیسی میں اپلائی کریں گے جو کہ آپ کو انٹرویو کیلئے بلائے گی۔ پھر آپ کا کیس مائیگریشن بورڈ کو سویڈن بھیج دیا جائے گا۔ بورڈ حکام آپ کے بزنس پلان کا جائزہ لیں گے اور اس پر فیصلہ کریں گے۔ آپ کی درخواست کے ساتھ جنرل دستاویزات کے علاوہ درج ذیل کاغذات ضرور ہونے چاہئیں۔
٭ بزنس پلان
٭ مارکیٹ سٹڈی کے کاغذات
٭ سپلائرز کے ساتھ معاہدہ کے کاغذات / عمارت کے حصول کیلئے معاہدہ
٭ کاروباری اجازت نامہ
٭ سرمایہ کاری اورس لیکویڈیٹی بجٹ+ نفع نقصان کا تخمینہ
٭ بجٹ بیلنس شیٹ

اہم سوالات

س: میرے پاس سویڈن کا مستقل رہائشی پرمٹ ہے‘ کیا میں کسی اور شینگن ملک میں کام کر سکتا ہوں؟
ج: نہیں‘ شینگن ممالک کے درمیان معاہدے کا مقصد ایک دوسرے کے لیے سفر کو آسان بنانا ہے۔ آپ کسی دوسرے شینگن ملک میں کام کرنا چاہتے ہیں تو اس کے قوانین کے مطابق چلنا ہو گا۔
س: مجھے ریذیڈنس اور ورک پرمٹ مل چکے ہیں‘ رہائشی رجسٹریشن نمبر کیسے حاصل کروں؟
ج: جن لوگوں کو رہائش کا پرمٹ جاری ہوتا ہے‘ سویڈن میں داخل ہونے پر خودبخود رجسٹرڈ رہائشی بن جاتے ہیں اس سلسلہ میں رجسٹریشن کی ذمہ داری ٹیکس اتھارٹی پر ہوتی ہے۔ آپ مزید اس سے رابطہ کر سکتے ہیں۔
س: کیا میرا بھائی یہاں آ کر میرے ریسٹورنٹ پر کام کر سکتا ہے؟
ج: اس مقصد کے لیے آپ کے بھائی کو رہائشی اور ورک پرمٹ کے لیے سویڈش ایمبیسی میں اپلائی کرنا پڑے گا اور اس کے لیے آپ بطور مالک ریسٹورنٹ اس کو تمام قواعد وضوابط پورے کرتے ہوئے جاب آفر بھیجیں گے جس پر مائیگریشن بورڈ فیصلہ کرے گا۔
س: میرے ورک پرمٹ کا کتنے عرصے میں فیصلہ ہو گا؟
ج: ایمبیسی میں اپلائی کرنے کے بعد عموماً 90 روز میں فیصلہ ہو جاتا ہے۔ پچھلے سال کے ریکارڈ سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ 90فیصد کیسوں کا 3ماہ کے اندر فیصلہ ہو گیا تھا۔

فیملی ملاپ

آپ کا شوہر/بیوی‘ والدہ/والد یا کوئی اور قریبی رشتہ دار سویڈن کا شہری ہے یا وہاں رہائشی پرمٹ لے کر رہ رہا ہے اور آپ اس کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں تو اس کے لیے آپ کو “Residence Permit” حاصل کرنا ہو گا۔ پرمٹ کے لیے فیڈیکس کے ذریعے سویڈش ایمبیسی میں اپلائی کریں تاہم اس کا فیصلہ مائیگریشن بورڈ کرے گا جس کو ایمبیسی آپ کے انٹرویو کے بعد کیس بھجوائے گی۔

رہائشی پرمٹ کی مدت

شوہر یا بیوی اپلائی کر رہے ہوں تو ان کو مستقل رہائشی پرمٹ جاری ہو گا بشرطیکہ وہ پاکستان میں شادی کے بعد کم از کم 2 سال اکٹھے رہے ہوں بصورت دیگر 2سال کا رہائشی پرمٹ دیا جائے گا جو کہ قابل توسیع ہو گا۔ طلاق کی صورت میں مائیگریشن بورڈ پرمٹ منسوخ بھی کر سکتا ہے۔

ڈی این اے ٹیسٹ

مائیگریشن بورڈ نئے قوانین کے تحت فیملی ملاپ کے کیسوں میں خونی رشتے کو جانچنے کے لیے ڈی این اے ٹیسٹ بھی کرا سکتا ہے جس کی فیس بورڈ خود ادا کرے گا۔

فیملی ملاپ پرمٹ اپلائی کرنے کیلئے درکار دستاویزات

٭ مکمل پرشدہ فارم نمبر 115021 برائے بالغان‘ بچوں کے لیے فارم نمبر 113021 استعمال کریں گے۔
٭ فیس جمع کرانے کی رسید۔
٭ اصل پاسپورٹ+شناختی کارڈ۔
٭ پاسپورٹ کے پہلے 2صفحات اور شناختی کارڈ کی دو دو کاپیاں۔
٭ 2پاسپورٹ سائز تصاویر۔
٭ خاوند/بیوی کے کیس میں نکاح نامہ بمعہ انگریزی ترجمہ کی دو دو کاپیاں۔ (نکاح متعلقہ اتھارٹی کے پاس رجسٹرڈ ہونا چاہیے)
٭ سویڈن میں رہائش پذیر رشتہ دار کی وہاں رہائش کے ثبوت کی کاپی (شہری نہیں ہے تو رہائشی پرمٹ کی کاپی لگائی جائے)

اہم سوالات

س: مائیگریشن بورڈ ڈی این اے ٹیسٹ کس صورت میں کرائے گا؟
ج: فیملی ملاپ کے کیس میں اگر دستاویزات کے ذریعے خون کا رشتہ سو فیصد ثابت نہ ہو رہا ہو اور بورڈ حکام کو شبہ ہو جائے تو ڈی این اے ٹیسٹ کا سہارا لیا جائے گا۔
س: میں سویڈن کی شہری ہوں اور میں نے پاکستان جا کر شادی کی ہے‘ کیا میں پاکستانی شوہر کو ساتھ لا سکتی ہوں؟
ج: اس کے لیے شوہر کو سویڈش ایمبیسی میں فیملی ملاپ پرمٹ اپلائی کرنا پڑے گا پھر وہ آپ کے ساتھ آ سکے گا۔
س: میرے رشتہ دار کو فیملی ملاپ کے لیے رہائشی پرمٹ جاری ہو گیا ہے‘ کیا اس کے سفر کے لیے حکومت سے امداد مل سکتی ہے؟
ج: آپ خود بھی رہائشی پرمٹ ہولڈر ہیں تو جنیوا کنونشن کے تحت رشتہ دار کو سویڈن بلوانے کے لیے امداد کی درخواست دے سکتے ہیں جس پر مائیگریشن بورڈ مالی امداد مہیا کر سکتا ہے۔
س: مجھے کیسے علم ہو گا کہ میری پرمٹ کی درخواست مائیگریشن بورڈ تک پہنچ چکی ہے؟
ج: امیگریشن بورڈ پرمٹ کے لیے درخواست ملنے پر آپ کے سویڈن میں رہائش پذیر رشتہ دار کو طلب کر کے معلوماتی فارم پر کروائے گا اور انٹرویو کرے گا۔ رشتہ دار سے آپ کو معلوم ہو جائے گا۔ بعدازاں آپ کا رشتہ دار جب چاہے بورڈ سے معلومات حاصل کر سکتا ہے۔
س: کیا رہائشی پرمٹ پر رہنے والوں کو صحت کی سہولتیں میسر ہیں؟ ج: جی ہاں‘ اگر آپ بطور رجسٹرڈ رہائشی رہ رہے ہیں یعنی کہ ایک سال کا عرصہ گزارنے کے بعد رجسٹریشن کرا رکھی ہے تو آپ کو سویڈش شہری والی تمام سہولتیں ملیں گی۔
س: میں اپنی بیوی کو سویڈن بلانا چاہتا ہوں‘ کیا اس کے لیے کوئی مالی شرائط بھی ہوں گی؟
ج: بالکل نہیں‘ فیملی ملاپ کے کیسوں میں مالی حیثیت دیکھی جاتی ہے نہ کوئی مالی گارنٹی طلب کی جاتی ہے‘ اس میں رشتے زیادہ اہمیت رکھتے ہیں۔
س: میں 9ماہ کے لیے پاکستان جانا چاہتا ہوں‘ میرا مستقل رہائشی پرمٹ تو منسوخ نہیں ہو گا؟
ج: آپ 12ماہ تک مسلسل سویڈن سے باہر ہوں تو پھر پرمٹ منسوخ کیا جا سکتا ہے۔

سویڈش شہریت

سویڈن کے قوانین کے تحت آپ دوہری شہریت رکھ سکتے ہیں۔سویڈن کی شہریت ان بنیادوں پر حاصل کی جا سکتی ہے۔

مستقل رہائشی پرمٹ

جب آپ کے پاس مستقل رہائشی پرمٹ ہو اور کم از کم 5سال سے سویڈن میں رہ رہے ہوں‘ عمر 18سال سے کم نہ ہو اور سویڈن میں رہائش کے دوران ریکارڈ صاف ستھرا رہا ہو تب آپ شہریت کے لیے درخواست دے سکتے ہیں۔ آپ کے اپلائی کرنے کے بعد امیگریشن بورڈ مختلف قانون نافذ کرنے والوں اداروں سے کردار کے متعلق تحقیقات کرے گا۔

سویڈن میں پیدائش

سویڈن میں بچوں کو والدین والی شہریت دینے کا طریقہ کار نافذ ہے۔ سویڈن میں پیدا ہونے والے بچے کے والدین میں سے کم از کم ایک کے پاس سویڈش شہریت ہو تو بچے کو خودبخود شہریت مل جائے گی۔

اپنایا ہوا بچہ

12سال سے کم عمر کے غیرملکی بچے جن کو سویڈش شہری اپنا لے وہ بھی 18سال کی عمر تک سویڈن میں رہائش پذیر رہے‘ شہریت کا حقدار ہو گا۔

You may also like...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

error: Content is protected !!
%d bloggers like this: