canada visa

کینیڈا، ویزا گائیڈ چیپٹر3

کینیڈ ین ویزے

کینیڈین امیگریشن قوانین کے مطابق پاکستانی شہریوں کےلئے کینیڈا میں داخل ہونے کےلئے کینیڈین ہائی کمیشن سے ویزا حاصل کرنا ضروری ہے جس کے لئے لاہور، کراچی میں اسلام آباد میں موجود کینڈین ویزا ایپلی کیشن سنٹر ز پر اپلائی کرنا ہوگا۔ کینیڈا بنیادی طور پر دو اقسام کے ویزے جاری کرتاہے۔ ایک کو عارضی سکونتی ویزا(Temporary resident visa) جبکہ دوسری کو مستقل سکونتی ویزا(Permanent resident visa) کہتے ہیں۔
ٹمپریری ریذیڈنٹ ویزے مدت کے لحاظ سے تین انواع کے ہوتے ہیں۔

سنگل انٹری ویزا

یہ ویزا صرف ایک بار کینیڈا میں داخل ہونے کے بعد ایگزٹ ہونے پر ختم ہوجاتا ہے۔

 ملٹی پل ویزا

اس ویزہ پر مقررہ مدت میں جتنی بار مرضی آ جا سکتے ہیں۔

ٹرانزٹ ویزا

یہ ویزا کینیڈا سے ہوتے ہوئے کسی اور ملک میں جانے والوں کو چند گھنٹے کے سٹے کیلئے جاری کیا جاتاہے۔

ٹمپریری ریذیڈنٹ ویزے کی اقسام

کینڈا کے عارضی سکونتے ویزے تین قسموں کے ہیں ۔

نمبر ون: وزٹ ویزا
نمبرٹو: ورک پرمٹ
نمبر تھری: سٹڈی پرمٹ

وزٹ ویزے کی آگے تین اقسام ہیں۔ جن میں ٹورسٹ ویزا،بچوں سے ملاپ کا ویزا اور بزنس ویزا شامل ہیں۔

وزٹ ویزا

سیروتفریح کیلئے وزٹ ویزا جاری کیا جاتا ہے جو کہ چھ ماہ تک کی مدت کا ہوتاہے۔ بطورٹورسٹ کینیڈا جانے کیلئے ضروری ہے کہ آپ صاحب حثییت ہوں اور ٹو رکے اخراجات کیلئے وافر رقم موجود ہو۔جس کے دستاویزی ثبوت بنک سٹیٹمنٹ اور جائیداد کے پیپرز ہونگے۔
اگر آپ کا کینڈین سپانسر آپ کے ٹورکے اخراجات کی ذمہ داری بھی لے رہا ہے تو پھر لمبی چوڑی سٹیٹمنٹ کے بغیر بھی ویزا لگ سکتاہے۔
وزیٹر ویزا دیتے وقت ویزا افسر نے یہ تسلی کرنا ہوتی ہے کہ وزیٹر سیروتفریح کے بعد مقررہمدت میں واپس آجائے گا۔درخواست گذار نے یہ چیزیں اپنے ڈاکومنٹس سے ثابت کرنا ہوتی ہیں۔ اگر آپ پاکستان کے ساتھ اپنا مضبوط معاشی ومعاشرتی تعلق ثابت کرپائیں تو پھر انٹرویو کے بغیر ہی ویزا لگ کر آجائے گا۔ آپ یہ دو پوائنٹ سمجھ جائیں اور ان پر پورے اترتے ہوں تو پھر کسی ملک کا بھی ویزاآپ کیلئے مسئلہ نہیں رہے گا۔
اپنے ملک سے مضبوط معاشی تعلق کا مطلب ہے کہ یہاں آ پکااپنا گھر ہو، جائیداد ہوکاروبارہو یا پھر اچھی نوکری ہو۔یعنی کہ آپ مالی طور پر مضبوط ہوں اور اپنے ملک میں رہ کر ہی اپنے مالی معاملات چلانا چاہتے ہوں،یہ شبہ نہ گزرے کہ ٹورسٹ کے طور پر کینڈا جائیں گے اور سلپ ہوجائیں گے ۔۔یعنی چھپ کر کام کریں گے۔دوسرا پوائنٹ ہے مضبوط معاشرتی رشتہ،اس کا مطلب ہے کہ آپ کا باقاعدہ خاندان پاکستان میں ہو جس کے بغیر آپ باہر نہ رہ سکتے ہوں اور آپ کو واپس آنا ہی پڑے۔یعنی کہ ماں ، باپ، بہن بھائی اور بیوی بچے وغیرہ۔اسی لئے سنگلز کی نسبت شادی شدہ افراد کو وزٹ ویزا ملنے کے چانسز ہمیشہ زیادہ ہوتے ہیں۔

canada visit visa

کینڈین وزٹ ویزا کیلئے درکار دستاویزات

۔۔۔سب سے پہلے آپ کو پاسپورٹ چاہیئے جس کی کم از کم اگلے چھ ماہ تک مدت ہو۔

ویزاسٹیکر اورامیگریشن سٹیمپس کیلئے پیجز خالی ہوں۔
۔۔۔پاسپورٹ کے انفارمیشن پیچ کی دو فوٹو کاپیاں
۔۔دوعدد تصاویر(ایمبیسی کی ہدایات کے مطابق)
۔۔۔پرشدہ ویزا فارمز
کینڈین ہائی کمیشن کی ویب سائٹ www.cac.gc.ca سے ویزا فارم imm5257،فیملی انفارمیش فارم imm5645 اورسٹیچوٹری ڈیکلریشن آف کامن لاءیونین imm5409 ڈائون لوڈ کرکے فل اپ کریں۔اگر ویزا ایپلی کیشن سنٹر اپنے ساتھ کوئی نمائندہ لیکر جانا چاہتے ہیں تو ریپریزنٹیٹو فارم imm5476 بھی لے لیں۔یہ تما م فارمز کمپیوٹر پر ہی فل اپ کریں اور پرنٹ نکال لیں ۔فارم اچھے طریقے سے پُر کریں‘ کوئی خانہ خالی مت چھوڑیں اور جو سوال آپ سے متعلقہ نہ ہو اس کے سامنے N/A لکھ دیں۔ فارم میں وہی معلومات درج کریں جس کے دستاویزی ثبوت آپ کے پاس موجود ہوں‘ نامکمل درخواست یا غلط معلومات پر ویزا کے اجراءمیں تاخیر ہو سکتی ہے‘ درخواست واپس یا مسترد بھی کی جا سکتی ہے۔
یہ فارمز آپ ویزا ایپلی کیشن سنٹر جاکر بھی فل اپ کرسکتے ہیں ،وہا ں آپ کو معاونت بھی مل سکتی ہے جس کی تین سے ساڑھے تین ہزار روپے فیس لی جاتی ہے۔
۔۔۔اہلیہ اور بچے ساتھ ہیں تو ایک ہی فارم پر اپلائی کرسکتے ہیں۔
۔۔سپانسر لیٹر جس میں وزٹ کا مقصد بیان کیا گیا ہو۔
۔۔۔آپکا مکمل ٹور پروگرام( یعنی کہ کہاں کتنے دن کیلئے جانا ہے اور کیا دیکھنا ہے)
۔۔۔شادی شدہ ہیں تو نادرا سے جاری شدہ نکاح نامہ،بچے ہیں تو ان کے برتھ سرٹیفکیٹس (ترجمہ اور تصدیق شدہ )
۔۔۔بنک سٹیٹمنٹ اور جائیداد کے پیپرزکی مصدقہ نقول
۔۔۔بزنس مین ہیں تو اس کا ثبوت،یعنی این ٹی این ، چیمبر آف کامرس کی ممبر شپ( اگر ہوتو)
۔۔۔ملازمت کرتے ہیں تو اس کا سرٹیفکیٹ (سروس کارڈ اور سیلر سلپ وغیرہ)
۔۔ہوٹل بکنگ اور ریٹرن ٹکٹ( میزبان کے ہاں ٹھہرنا ہے تو ہوٹل بکنگ کی ضرورت نہیں ہے)
۔۔ویزا فیس سو کینڈین ڈالر تقریباً پاکستانی آٹھ ہزار روپے، 3300 روپے پراسیسنگ فیس اور 8500 روپے بائیومیٹرک فیس ویزا ایپلی کیشن سنٹر میں وصول کی جائے گی۔
سنٹر پر ایپلی کیشن ٹول کٹ کے مطابق دستاویزات پوری ہونے پر ہی آپ کی ویزا درخواست جمع کی جائے گی۔
نوٹ: واضح رہے کہ کینیڈین ہائی کمیشن میں دستی ویزا درخواستیں جمع نہیں کی جاتیں وہاں آپ کو اسی صورت داخلے کی اجازت ہو گی کہ اگر آپ کو ویزا انٹرویو کےلئے بلایا گیا ہو۔

بزنس وزیٹر ویزا

اگر آپ نے کسی بزنس میٹنگ ،کانفرنس یا نمائش میں شرکت کیلئے کینیڈا جانا ہے تو بزنس وزیٹر ویزااپلائی کریں گے ۔ اس کے لئے تمام ڈاکومنٹس وہی ہوںگے۔ سپانسر لیٹر کی جگہ بزنس کمپنی کا انوی ٹیشن لیٹر لگ جائے گا۔ اور آپکی تمام کاروباری دستاویزات درکار ہوں گی۔

ویزا ایپلی کیشن سنٹرز

پاکستان میں لاہور،کراچی اور اسلام آباد میں کینیڈا کے ویزا ایپلی کیشن سنٹرز موجود ہیں ۔
اس سے متعلق تما م معلومات آپ ویب سائٹ www.vfsglobal.ca سے حاصل کرسکتے ہیں۔ان کی ہیلپ لائن 0518439344 ہے۔
نوٹ: کینیڈین امیگریشن رولز کے مطابق ایک عارضی سکونتی ویزا اس بات کی ضمانت نہیں ہے کہ آپ کو کینیڈا میں داخل ہونے کی اجازت ہو گی بلکہ کینیڈین ایئرپورٹ پر تعینات کینیڈین بارڈر سروسز ایجنسی کے حکام اس بات کا حتمی فیصلہ کریں گے۔ وہ اس بات کا جائزہ لیں گے کہ آپ کینیڈا میں داخلے کی اہلیت پر پورا اترتے ہیں یا نہیں۔ ویزا اپلائی کرنے سے کینیڈین ایئرپورٹ پر اترنے کی درمیانی مدت میں حالات وواقعات کی تبدیلی یا کوئی ایسی اطلاع ملنے پر جو کہ ویزا افسر کو میسر نہیں تھی وہ انٹری دینے سے انکار کر سکتے ہیں۔ قیام کی مدت میں کمی بیشی کا بھی اختیار رکھتے ہیں۔ تاہم ایسا مخصوص حالات اور اِکا دُکا کیسوں میں ہی ہوتا ہے۔

میڈیکل ٹیسٹ

درخواست جمع کرانے کے بعد آپ کو میڈیکل ٹیسٹ کرانے کا کہا جا سکتا ہے جس کےلئے ویزا افسر کے بھیجے گئے خط میں تمام معلومات موجود ہوں گی تاہم یہ وزٹ کرنے والے تمام لوگوں کےلئے ضروری نہیں ہے۔ میڈیکل ٹیسٹ کی صورت میں ویزا اجراءکے عمل میں 3ماہ تک کی تاخیر ہو سکتی ہے۔

ویزا اپلائی کرنے کے بعد کا عمل

آپ کی درخواست کٹ مکمل ہو اور مطلوبہ معیار پر پوری اترتی ہو تو ویزا لگنے میں اکیس روز لگیں گے ،زیادہ سے زیادہ دو ماہ میں درخواست کو ویزا جاری کر کے یا مسترد کر کے نمٹا دیا جاتاہے۔ اس دوران کسی دستاویز کی ضرورت پڑی‘ کوئی تصدیق درکار ہوئی یا میڈیکل ٹیسٹ کرانا ہوا تو ویزا افسر آپ کو مطلع کرے گا۔ آپ کی درخواست منظور ہوئی تو آپ کا پاسپورٹ ویزا لگا کر واپس بھیج دیا جائے گا۔ مسترد ہونے کی صورت میں پاسپورٹ کے ساتھ مسترد کئے جانے کا خط (Refusal letter) بھی بھیجا جائے گا۔ اس عمل کے دوران ویزا افسر نے آپ کی اہلیت مزید جانچنے کےلئے انٹرویو کا فیصلہ کیا تو آپ کو تاریخ اور وقت سے آگاہ کیا جائے گا۔

ویزا انٹرویو

ویزا انٹرویو کےلئے امیدوار کو کینیڈین ہائی کمیشن اسلام آباد بلایا جاتا ہے جس کےلئے انٹرویو لیٹر ضرور ساتھ لے کر جائیں اس کے بغیر آپ کو اندر جانے کی اجازت نہیں ملے گی۔ انٹرویو کے دوران ویزا افسر آپ سے وضاحت طلب باتوں سے متعلق سوال کرے گا۔ آپ ان کے وہی جوابات دیں جو کہ حقیقت پر مبنی ہیں اور ویزا فارم میں درج کئے ہیں۔ گھبرانے کی ضرورت ہرگز نہیں ہے کیونکہ ویزا انٹرویو کےلئے بلائے گئے امیدواروں کی اکثریت کو ویزا جاری کر دیا جاتا ہے۔

کینیڈین ایئرپورٹ پر پہنچنے کے بعد

کینیڈین ایئر پورٹ پر کینیڈین بارڈر سروسز ایجنسی (CBSA) کا آفیسر آپ کا استقبال کرے گا اور آپ سے پاسپورٹ ودیگر سفری دستاویزات طلب کرے گا۔ آپ مطلوبہ کاغذات اپنے پاس رکھیں اور دوران سفر اس بات کو یقینی بنائیں کہ یہ سامان کے اندر نہ رکھی ہوں۔ پاسپورٹ اور سفری دستاویزات دیکھ کر آفیسر آپ سے چند سوال کرے گا جس کا مقصد یہ پرکھنا ہو گا کہ آپ وزٹ مکمل کر کے مقررہ مدت میں واپس لوٹ جائیں گے یا کسی اور مقصد سے یہاں غیر قانونی قیام کا ارادہ رکھتے ہیں۔ تسلی بخش جوابات دینے پر آپ کو انٹری مل جائے گی۔

وزٹ ویزا کی میعاد میں اضافہ

کینیڈا پہنچنے کے بعد وزٹ ویزا کی میعاد بڑھوائی جا سکتی ہے۔ اس کےلئے آپ کو وہیں اپلائی کرنا ہو گا۔ درخواست فارم میں آپ کو میعاد بڑھوانے کےلئے ٹھوس وجہ بیان کرنا ہو گی اور متعلقہ دستاویزات ساتھ منسلک کرنا ہوں گی۔ آپ اپنا Status بھی تبدیل کرا سکتے ہیں مثلاً بطور وزیٹر وہاں جائیں اور کسی شارٹ کورس میں داخلہ لینا چاہیں تو اس کےلئے Status تبدیل ہو گا تاہم مطلوبہ کورس کی مدت 6ماہ سے کم ہونی چاہئے اور آپ پہلے ویزے کی میعاد ختم ہونے سے ایک ماہ پہلے تک اپلائی کر سکیں گے۔ اس کےلئے 75 کینیڈین ڈالر فیس بھی جمع کرانا پڑے گی۔

canada work permit

ورک پرمٹ

ہر سال عارضی طور پر کام کرنے کےلئے 90ہزار سے زائد غیر ملکی ورکر کینیڈا جاتے ہیں جو کہ کینیڈین کمپنیوں کی لیبر کی ضروریات پوری کرنے اور صنعتی ترقی میں معاون ثابت ہوتے ہیں۔ یہ ویزا حاصل کرنا ہو تو عارضی سکونتی ویزا کےلئے درکار کاغذات کے علاوہ ورک پرمٹ کی ضرورت ہوتی ہے جس کی میعاد 3سال تک ہو سکتی ہے۔
جس ادارے یا کمپنی کو آپ کی خدمات درکار ہیں وہ آپ کی اہلیت کا جائزہ لینے کے بعد ہیومن ریسورس اینڈ سکلڈڈویلپمنٹ کینیڈا سے لیبر مارکیٹ سے متعلق رائے لے گا۔ جس میں
طے کیا جائے گا کہ اس جاب پر کسی غیر ملکی کو رکھا جا سکتا ہے یا نہیں۔ اسے لیبر مارکیٹ سروے یا لمیا بھی کہتے ہیں۔لمیا مثبت آنے کی صورت میں ورک پرمٹ جاری ہو گا جو کہ امیدوار درخواست ویزا کے ہمراہ سفارتخانے بھجوائے گا۔ ورک پرمٹ ویزا کی فیس 150ڈالر ہے۔ یاد رکھیں کہ کینیڈا میں نوکری کےلئے ریکروٹمنٹ فیس‘ پلیسمنٹ فیس اور سفری اخراجات متعلقہ آجر (ادارہ کا مالک) برداشت کرے گا۔ ورکرز کو یہ ادا کرنے سے منع کیا گیا ہے اور اگر کوئی ریکروٹمنٹ ایجنٹ یہ فیسیں وصول کرتا ہے تو یہ غیر قانونی ہو گا۔

سٹڈی پرمٹ

کینیڈین تعلیمی اداروں کا معیار کسی بھی ترقی یافتہ ملک سے کم نہیں ہے اور دنیا بھر میں تسلیم کیا جاتا ہے۔ اس کے باوجود یہاں تعلیمی اخراجات دیگر ملکوں کی نسبت کم ہیں یہی وجہ ہے کہ ہر سال دنیا بھر سے ڈیڑھ لاکھ طلباءحصول تعلیم کےلئے یہاں آتے ہیں۔ کینیڈا میں تعلیم حاصل کرنے کےلئے سٹڈی پرمٹ کی ضرورت ہوتی ہے۔

اہلیت

٭ آپ کو کینیڈین سکول‘ کالج‘ یونیورسٹی یا کسی اور تعلیمی ادارے نے داخلہ دینے کی حامی بھری ہو۔
٭ ثابت کر سکیں کہ تعلیمی‘ رہائشی اور دیگر اخراجات پورے کر سکتے ہیں۔
٭ قانون پسند شہری ہوں اور کسی کریمنل کیس میں ملوث نہ ہوں‘ اس کےلئے پولیس رپورٹ پیش کرنا ہو گی۔
٭ صحت مند ہوں اور ضرورت پڑنے پر میڈیکل معائنہ کرا سکیں۔

٭ امیگریشن آفیسر کو قائل کر سکیں کہ کورس مکمل ہونے پر کینیڈا سے واپس چلے جائیں گے۔

اپلائی کرنے کےلئے ہدایات

(i سٹڈی پرمٹ کےلئے سب سے پہلے انٹرنیٹ کے ذریعے تعلیمی ادارہ تلاش کریں جو آپ کی تعلیمی ضروریات پوری کرتا ہو اور آپ کے بجٹ کے مطابق ہو۔

(ii مطلوبہ تعلیمی ادارے میں داخلہ کےلئے شرائط پوری کریں‘ بعض ادارے لینگوئج ٹیسٹ کی شرط بھی رکھتے ہیں جبکہ بعض تعلیمی اسناد وغیرہ منگوا کر ہی داخلے کی حامی بھر لیتے ہیں۔

(iii مطلوبہ داخلہ فیس آن لائن یا بذریعہ منی آرڈر / ڈرافٹ جمع کرائیں پھر ادارہ آپ کو “Letter of acceptance” بھیجے گا۔ یہ بات ذہن میں رکھیں کہ کینیڈین تعلیمی اداروں کی بڑی تعداد انٹرنیشنل سٹوڈنٹس سے سال بھر کی پوری فیس یکمشت نہیں لیتی۔

(iv سکول/ کالج/ یونیورسٹی کا لیٹر ملنے کے بعد لیٹر اور اپنی تعلیمی اسناد کی کاپیوں کے ہمراہ عارضی سکونتی ویزا کےلئے درکار دستاویزات لگا کر ویزا اپلائی کریں۔سٹڈی ویزا کی فیس 125 ڈالر (ناقابل واپسی) ہے جو کہ سٹینڈرڈ چارٹرڈ بنک میں جمع کرائیں گے۔

(vi درخواست جمع کرانے کے بعد ایک ماہ کے عرصہ میں سارا عمل میں مکمل کر لیا جاتا ہے۔

Canadian study visa

عارضی سکونتی ویزوں سے متعلق اہم سوالات

س: ویزا درخواست مسترد ہو جائے تو اپیل کی جا سکتی ہے؟

ج: نہیں! اس سلسلہ میں کوئی اپیل نہیں کی جا سکتی البتہ مسترد کئے جانے کی وجوہات جو کہ رفیوزل لیٹر میں بیان کی گئی ہیں ان کو دور کر کے آپ دوبارہ ویزا اپلائی کر سکتے ہیں۔

س: کیا میں اپنی دستاویزات کی ٹرانسلیشن خود کر کے ویزا درخواست کے ساتھ لگا سکتا ہوں؟

ج: نہیں! آپ اپنے دستاویزات کی ٹرانسلیشن خود کرنے کے اہل نہیں ہیں۔ یہ آپ کسی اور پروفیشن

ٹرانسلیٹر سے کرائیں گے تمام تراجم کسی نوٹری سے تصدیق کرائے جانے بھی ضروری ہیں

س: کیا میں اپنی ویزا درخواست کی تکمیل کےلئے کوئی نمائندہ / کنسلٹنٹ رکھ سکتا ہوں؟

ج: کینیڈین ایمبیسی اس بات کی اجازت دیتی ہے تاہم اس کی حوصلہ افزائی نہیں کرتی۔

س: میرے نمائندے نے میرے ویزا فارم بھرے اور جمع کرا دیئے‘ انٹرویو میں جو سوال مجھ سے

کئے گئے میں نے ان کے فارم کے مطابق جواب نہیں دیئے اس پر مجھے 2 سال کےلئے نااہل کر دیا

گیا‘ حالانکہ فارم میں نے خود پُر نہیں کئے تھے‘ میں کیوں ذمہ دار ٹھہرایا گیا؟

ج: اپنے ویزا فارموں میں دی گئی تمام معلومات کے آپ ذمہ دار ہیں کیونکہ آپ کے ان پر دستخط

موجود ہیں۔ آپ کوئی کنسلٹنٹ یا نمائندہ رکھتے ہیں تو یاد رکھیں کہ وہ اپنی فیس کی خاطر فارم میں غیر مصدقہ اور حقیقت سے برعکس معلومات بھی بھر دیتے ہیں جو کہ تصدیق پر ثابت نہیں ہوتیں اور ذمہ داری براہ راست امیدوار پر ہی عائد ہوتی ہے۔ اس لئے ضروری ہے کہ فارم پر دستخط کرتے وقت تمام معلومات پڑھ لیں اور حقیقی کوائف ہی مہیا کریں۔

س: میں نے سنا ہے کہ شادی شدہ افراد کو غیر شادی شدہ کی نسبت آسانی سے کینیڈا کا ویزا مل جاتا ہے۔ اس کےلئے میں کسی لڑکی سے عارضی شادی کر لوں اور ویزا ملنے کے بعد طلاق دے دوں‘ اس پر ایمبیسی کو کوئی اعتراض ہو گا؟

ج: ویزا کے حصول کےلئے اس قسم کی شادی فراڈ کے زمرے میں آتی ہے جس کے نتیجے میں آپ کی درخواست مسترد ہو جائے گی اور آئندہ دو سال تک دوبارہ اپلائی نہیں کر سکیں گے۔ ویزا لگنے کی صورت میں کوائف بوگس ہونے کی اطلاع پر آپ کو کینیڈا سے ڈی پورٹ کیا جا سکتا ہے۔

س: میں اپنے ساتھ اپنے نابالغ بچے کو بھی کینیڈا لے جانا چاہتا ہوں جس کا اندراج میرے پاسپورٹ پر ہے کیا میرے ویزا پر ایسا ممکن ہے؟

ج: جی نہیں! اس کےلئے آپ کو الگ ویزا لینا پڑے گا جو کہ آپ کے پاسپورٹ پر ہی لگے گا۔ اس مقصد کےلئے آپ باقاعدہ الگ فیس جمع کرا کر اپلائی کریں گے۔

س: میں نے ویزا اپلائی کرنے کے بعد کچھ معلومات بذریعہ فیکس ایمبیسی بھجوائیں مگر کوئی جواب نہیں دیا گیا‘ کیا یہ ایمبیسی کو مل گئی ہوں گی؟

ج: ایمبیسی کا عملہ ہر آنے والی فیکس کو بغور پڑھتا ہے اور متعلقہ کیس کے ساتھ منسلک کر دیتا ہے تاہم ویزا اجراءکے عمل کے بارے میں سوالات کا جواب نہیں دیا جاتا۔

س: ایمبیسی نے میری ویزا درخواست واپس کیوں بھجوا دی؟

ج: کینیڈین ایمبیسی تمام نامکمل درخواستیں واپس بھجوا دیتی ہے لہٰذا ویزا فارم مکمل طور پر پُر کریں اور ساتھ تمام مطلوبہ کاغذات منسلک کریں۔ دوبارہ اپلائی کرنے پر نئی فیس جمع کرانا ہو گی۔

س: عارضی سکونتی ویزا کی میعاد کتنی ہو گی؟

ج: عارضی سکونتی ویزا کی میعاد وزٹ کےلئے عموماً 6ماہ تک کی ہوتی ہے تاہم حتمی فیصلہ کینیڈا پہنچنے پر امیگریشن افسر کرے گا جو کہ انٹری کی سٹیمپ میں واپسی کی تاریخ بھی درج کر دے گا۔

س: کیا میرے اہل خانہ ویزا کےلئے علیحدہ اپلائی کرینگے؟

ج: وہ آپ کے ساتھ ہی اپلائی کریں اس صورت میں ایک ہی ویزا فارم استعمال ہو گا تاہم پاسپورٹ تمام بالغ افراد کے جمع ہونگے اور کیس کا ایک ساتھ فیصلہ ہو جائے گا۔

س: کیا میں وزٹ ویزا پر کینیڈا جا کر تعلیم حاصل کر سکتا ہوں یا کام کر سکتا ہوں؟

ج: ورکرز کی بعض کیٹگریز میں ورک پرمٹ کی ضرورت نہیں ہے تاہم وزٹ کے دوران کام کی اجازت لینا ہو گی۔ اسی طرح 6ماہ تک کے تعلیمی کورس میں بھی داخلہ لیا جا سکتا ہے۔

س: میں کینیڈا کا شہری ہوں‘ میں اپنے پاکستانی رشتہ دار یا دوست کو یہاں وزٹ کےلئے کیسے مدعو کروں؟

ج: اس کےلئے آپ اپنے رشتہ دار/ دوست کو درج ذیل دستاویزات بھیجیں جو کہ ویزا درخواست کے ساتھ لگائی جائیں۔

(i دعوتی خط جس میں اپنے اور اس کے تمام کوائف سمیت باہمی تعلق کی نوعیت اور وزٹ کا دورانیہ درج ہو‘ اخراجات کون برداشت کرے گا یہ بھی واضح کرنا ہو گا۔

(ii شہریت یا مستقل سکونتی لیٹر کی کاپی۔

(iii اخراجات آپ نے برداشت کرنے ہیں تو اپنی آمدن کی تفصیلات۔

(iv آپ کی کمپنی کی طرف سے مدت ملازمت اور تنخواہ کے بارے میں خط۔

س: میں نے ملٹی پل ویزا کےلئے اپلائی کیا مگر مجھے سنگل انٹری ویزا دیا گیا کیا مجھے فیس کی بقایا رقم واپس مل سکتی ہے؟

ج: یہ ممکن نہیں ہے اور یہ ضروری امر ہے کہ جس کیٹگری کےلئے اپلائی کریں گے اس کی مطلوبہ فیس بھی جمع کرائیں گے جبکہ ویزا کا فیصلہ کرنا ویزا افسر کی صوابدید ہے وہ مکمل طورپردرخواست مسترد کر دے فیس پھر بھی قابل واپسی نہیں ہے۔

کینیڈ ین امیگریشن

کینڈین حکومت نے امیگریشن کے خواہشمند غیر ملکی شہریوں کو سالہا سال تک لٹکانے کے بجائے اب مہینوں میں مستقل سکونت دینے کا پروگرام شروع کررکھا ہے جسے ایکسپریس انٹری کہتے ہیں۔
اس میں CANADA EXPRESS ENTRY COMPREHENSIVE RANKING SYSTEM
یعنی سی آرایس متعارف کرایا گیا ہے جس کے تحت تمام امیدواروں کو ان کی عمر، تعلیم، لینگوئج میں مہارت، جاب آفر اورتجربے وغیرہ کی بنیاد پر پوائنٹ دیئے جاتے ہیں اور نمایاں پوائنٹس حاصل کرنے والے امیگریشن کیلئے اپلائی کرنے کے حقدارٹھہرتے ہیں۔کینیڈا جاب بینک کے ذریعے موزوں جاب تلاش کرنے کی سہولت بھی دستیاب ہے۔اس پروگرام میں پیشوں کی تعداد بھی بڑھا دی گئی ہے ۔آپ اپلائی کرنے سے قبل cic.gc.ca پرجاکرپروفیشنز کی لسٹ میں اپنا پیشہ ضرور چیک کرلیں ۔

express entry

ایکسپریس انٹری میں پوائنٹس کی تقسیم

کمپری ہینسیو رینکنگ سسٹم کے تحت کل نمبر1200 ہیں جن کی تقسیم اس طرح کی گئی ہے۔

عمر:100پوائنٹ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔میاں بیوی کے اکٹھے اپلائی کرنے پر: 110
تعلیم:140 پوائنٹ۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اکٹھے اپلائی کرنے پر:150
انگریزی یا فرنچ میں مہارت:150پوائنٹ۔۔۔۔۔۔۔اکٹھے اپلائی کرنے پر:160
کینیڈامیں جاب کا تجربہ:70 پوائنٹ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اکٹھے اپلائی کرنے پر:80
ملازمت کی آفر:600 پوائنٹ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔سکل ٹرانسفر اہلیت:100پوائنٹ
صوبوں کے نامزد افراد:۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔600 اضافی پوائنٹ

ایکسپریس انٹری کے تحت اپلائی کرنے کا طریقہ

آن لائن اپلائی کرنے سے پہلے تمام متعلقہ دستاویزات اپنے پاس رکھ لیں ۔ اب ویب سائٹ cic.gc.ca کھولیں اور express entry پرجاکراپلائی پر کلک کریں اور وہاں دی گئی ہدایات کے مطابق فارم فل اپ کریں۔ اس کی کوئی فیس نہیں ہے ۔ کامیابی سے فارم پر کرنے پر آپ کو ریفرنس نمبر دیا جائے گا۔ اس کے بعد ایک ماہ کے اندر کینیڈا جاب بینک www.jobbank.gc.ca میں اس کا ریفرنس نمبراینٹرکرکے وہاں موجود موزوں ملازمتوں کے لئے اپنا پروفائل ڈالیں گے۔ اب امیدوار کو سٹیزن شپ اینڈ امیگریشن ویب سائٹ پر نظر رکھنا ہوگی۔ جہاں پر ایکسپریس انٹری پول کا اعلان کیا جاتاہے۔ اس پو ل میں نام آنے پر امیدوار فیڈرل سکلڈ ورکرز پروگرام، فیڈرل سکلڈ ٹریڈرز یا صوبوں کے نامزدپروگرام کے تحت شہریت کے لئے اپلائی سکیں گے۔

ایکسپریس انٹری پول میں نام آنے کے بعد

اب امیدوار پہلے سے رائج تین کیٹگریز کے تحت امیگریشن کیلئے اپلائی کریں گے۔
cic.gc.caویب سائٹ پر Forms and Guide سیکشن میں جائیں یہاں پر آپ کو Forms outside Canada کو کلک کرنا ہے۔ آپ کے سامنے مختلف اقسام کے Application Forms کے لنک آ جائیں گے۔ آپ کو ان میں سے 4 اقسام کے Forms کی ضرورت ہے۔
.1 Skilled Workers کےلئے 2 صفحات پر مشتمل بنیادی درخواست فارم جس پر آپ اور آپ کے خاندان کے افراد کی تصاویر کےلئے جگہ بھی موجود ہے۔ یہ فارم صرف Principal Applicant کو ہی بھرنا ہوتا ہے۔
.2 Back Ground فارم آپ کے شریک حیات اور 18سال سے زائد بچوں کو بھرنا ہوتا ہے۔ Additional Family انفارمیشن فارم آپ‘ آپ کی شریک حیات اور آپ کے 18سال سے زائد عمر کے بچوں کو بھرنا ہے۔
.4 Federal Skilled Worker۔ Economic Classes کے ٹائٹل والا فارم صرف آپ یعنی Principal Applicant کو ہی بھرنا ہے۔
ان چاروں اقسام کے فارموں کو کمپیوٹر پر ہی بھر لیں یا پھر ٹائپ کروائیں۔ فارم بھرنے کے بعد مطلوبہ فیس کا بندوبست کریں۔ آپ اور آپ کی شریک حیات کو 550 کینیڈین ڈالر فی کس جبکہ 18 سال سے کم عمر بچوں کو 150کینیڈین ڈالر فی کس کے حساب سے فیس جمع کرانا ہو گی۔ فیس صرف “Receiver General for Canada” کے نام پر کینیڈین ڈالر کے ڈرافٹ کی شکل میں ہی ادا کی جا سکتی ہے۔ ڈرافٹ درخواست کے ہمراہ لف کرنا ہو گا اور اس کی Back side پر اپنا نام پتہ انگریزی میں تحریر کریں۔

درخواست کے ساتھ کیا بھیجنا ہے؟

.1 تمام درخواست فارمز
.2 مطلوبہ فیس کا ڈرافٹ
.3 Principal Applicant کے پاسپورٹ کے ڈیٹا پیج کی نوٹری پبلک سے تصدیق شدہ کاپی
.4 آپ کے گھر کا پتہ (اردو اور انگریزی زبان میں Printed یا ٹائپ شدہ)
درخواست کہاں بھیجنی ہے؟
درخواست کو کسی اچھی کوریئر سروس کے ذریعے سینٹرل انٹیک آفس کینیڈا بھجوانا ہو گا۔ ایڈریس درج ذیل ہے

Citizenship and Immigration Canada,
Federal Skilled Worker,
Centralized Intake Office,

196 George Street, Sydney, NS
B1p 1J3, Canada

نوٹ: واضح رہے کہ مستقل سکونتی ویزا (امیگریشن) کےلئے پاکستانی امیدوار کینیڈین ہائی کمیشن اسلام آباد میں درخواستیں جمع نہیں کرا سکتے بلکہ مذکورہ بالا ایڈریس پر ہی بھجوائیں گے۔
اگر آپ نے درخواست درست بھری ہے تو کینیڈا میں درخواست کی وصولی کے ایک ماہ کے اندر آپ کو وفاقی حکومت کی جانب سے ابتدائی/ عبوری منظوری کا لیٹر موصول ہو جائے گا۔ اس مراسلے میں آپ کو آپ کا کیس فائل نمبر‘ رابطے کےلئے مخصوص نمبر فراہم کیا جائے گا اور مطلوبہ دستاویزات فراہم کرنے کےلئے کہا جائے گا۔ آپ کا کیس اسلام آباد ویزہ آفس کو Refer کر دیا جائے گا اور آپ کو کاغذات / دستاویزات کی تیاری کےلئے 120 دن کا وقت دیا جائے گا۔

کون سے کاغذات بھجوانے ہیں؟

1۔آپ اور آپ کی شریک حیات کی تعلیمی اسناد (بورڈ‘ ایچ ای سی‘ یونیورسٹی اور فارن آفس سے تصدیق شدہ)
.2 یونیورسٹی اسناد کے Transcripts یونیورسٹی کے سربمہر لفافے میں پیک شدہ 3۔ آپ‘ آپ کے شریک حیات اور بچوں کے اصل برتھ سرٹیفکیٹ
4. ۔ بچوں کی تعلیم کے سرٹیفکیٹ (اگر اطلاق ہوتا ہو تو)
5 ۔ آپ اور آپ کے شریک حیات کا شناختی کارڈ اور اس کا انگریزی ترجمہ
.6 نکاح نامہ اور انگریزی ترجمہ (یو سی اور فارن آفس سے تصدیق شدہ) ۔ تمام خاندان کے پاسپورٹ کی فوٹو کاپیاں
.8 Bank Statement اس بات کے ثبوت کےلئے کہ آپ کے پاس 6ماہ تک کینیڈا میں اپنے خاندان کی کفالت کےلئے رقم موجود ہے۔ یہ رقم تبدیل ہوتی رہتی ہے‘ خاندان کے افراد کی تعداد کو مدنظر رکھ کر اس رقم کا تعین ہوتا ہے۔ آج کل 4افراد کی فیملی کےلئے یہ رقم 22ہزار کینیڈین ڈالر ہے۔
.9 پولیس کریکٹر سرٹیفکیٹ (آپ‘ آپ کے شریک حیات اور 18 سال سے زائد عمر کے بچوں کا جمع کرانا ہو گا)
.10 امیگریشن سائز تصاویر (تمام افراد کےلئے)
.11 شادی کی تصاویر

بزنس کلاس ، انویسٹرز

یہ منصوبہ کینیڈین حکومت نے 1986ءمیں شروع کیا تھا تاکہ کامیاب کاروباری لوگوں کو کینیڈا میں لایا جا سکے۔ اس سے اب تک 18000 سے زائد غیر ملکی سرمایہ کار کینیڈین شہریت لے چکے ہیں اور نتیجتاً 4ارب ڈالر کی براہ راست سرمایہ کاری کینیڈا میں ہوئی ہے۔ یہ پروگرام اب بھی اپنی تمام تر کشش اور فوائد کے ساتھ جاری ہے۔

اہلیت

کاروباری حضرات جو کہ کم از کم 8 لاکھ کینیڈین ڈالر کے اثاثے رکھتے ہوں وہ اکیلے یا بیوی بچوں سمیت اپلائی کر سکتے ہیں۔
(ii کاروبار چلانے کا کم از کم 2 سال کا عملی تجربہ بھی ہو‘ کسی ڈپلومہ وغیرہ کی ضرورت نہیں ہے۔
(iii کسی کینیڈین حکومتی نمائندے‘ بنک یا ٹرسٹ کے ساتھ معاہدے کے بعد 5 سال تک کم از کم 4لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری کر سکے۔ یہ رقم کسی صوبے میں ایسے چھوٹے یا درمیانے درجے کے کاروبار میں لگائی جائے جس سے روزگار کے مواقع پیدا ہوں اور معاشی ترقی کا بھی باعث بنے۔ مزید کسی سرمایہ کاری کی ضرورت نہیں ہے بلکہ 5 سال بعد منافع کے بغیر اصل رقم یعنی 4لاکھ ڈالر بھی واپس مل جائیں گے جس کی ضمانت متعلقہ صوبہ دیتا ہے۔
نوٹ: آپ کسی کینیڈین بنک میں ایک لاکھ 20ہزار ڈالر جمع کرائیں گے تو وہ آپ کو سرمایہ کاری کےلئے 4لاکھ ڈالر کا قرضہ دےدے گا جس کےلئے کسی ضمانت کی ضرورت نہیں ہو گی۔ تقریباً 95فیصد انویسٹر اسی طرح قرضہ کے ذریعے ہی سرمایہ کاری کرتے ہیں اور اپنی باقی ماندہ رقم رئیل سٹیٹ یا کسی اور زیادہ منافع بخش کاروبار میں لگا دیتے ہیں۔
(iv آپ کی دستاویزات پوری ہوں تو کسی انٹرویو کی بھی ضرورت نہیں رہتی۔
(v آپ کو اور آپ کے اہلخانہ کو میڈیکل ٹیسٹ کلیئر کرنا ہونگے اور پولیس رپورٹس جمع کرانا ہوںگی۔

قیام کا عرصہ

مستقل رہائشی ویزا ملنے کے بعد ہر 5 سال میں سے 3 سال کینیڈا سے باہر رہ سکتے ہیں اس سے زیادہ کی صورت میں مستقل رہائشی “Status” پر اثر پڑے گا۔ دوسرے الفاظ میں آپ کو 5 سال میں 2 سال ضرور کینیڈا میں قیام کرنا ہو گا باقی عرصہ آپ پاکستان میں اپنے کاروبار اور دیگر معاملات کو دیکھ سکیں گے۔

شہریت

تین سال بعد آپ اور آپ کی فیملی کینیڈین شہریت/ پاسپورٹ کےلئے اپلائی کر سکیں گے جسکے بعد آپ کی آئندہ نسل پیدائش سے ہی کینیڈین شہری ہو گی۔

امیگریشن بارے اہم سوالات

س: طلب کردہ تصاویر کا اس قدر مخصوص سائز کیوں ہے؟

ج: آپ کی جمع کرائی گئی تصاویر آپ کے مستقل رہائشی کارڈ پر لگنی ہیں جو کہ اندازاً بنک کریڈٹ کارڈ کے سائز کا پلاسٹک کارڈ ہو گا اس پر بڑے سائز کی تصاویز نہیں لگ سکتیں اور سائز میں ایک حد سے زیادہ چھوٹی تصاویر قابل شناخت نہیں رہ جاتیں۔

س: فارم پر رہائشی پتے کی کتنی تفصیلات لکھی جائیں؟

ج: 18 سال کی عمر کے بعد آپ جہاں بھی 6ماہ سے زائد رہے ہیں‘ ان جگہوں کے ایڈریس طلب کئے گئے ہیں جو کہ آپ مکمل لکھیں گے اور اس کےلئے ایک الگ شیٹ بھی استعمال کی جا سکتی ہے۔

س: کیا مجھے حصول ویزا کےلئے کسی ایجنٹ یا کنسلٹنٹ کی ضرورت ہے؟

ج: نہیں! آپ کو کینیڈین ویزا کےلئے ایجنٹ یا کنسلٹنٹ کی ضرورت نہیں ہے تاہم آپ رہنمائی یا مدد کےلئے کسی کی خدمات حاصل کرنا چاہیں تو ذاتی طور پر ایسا کر سکتے ہیں۔

س: میں پاکستانی شہری ہوں اور دبئی میں کام کر رہا ہوں‘ کیا یہ ممکن ہے کہ میں کینیڈا کی امیگریشن کےلئے اسلام آباد سے اپلائی کروں اور دبئی میں کینیڈین ہائی کمیشن میں انٹرویو ہو؟

ج: بحیثیت پاکستانی شہری آپ اسلام آباد سے اپلائی کر سکتے ہیں تاہم آپ کا انٹرویو وہیں ہو گاجہاں سے آپ اپلائی کریں گے۔ اگر آپ قانونی طور پر کم از کم ایک سال سے دبئی میں رہ رہے ہیں تو وہاں موجود کینیڈین ہائی کمیشن میں اپلائی کر سکتے ہیں تاکہ آپ کا انٹرویو وہیں ہو۔

س: میں انٹرویو کےلئے اپنی اہلیہ اور بچوں کو ساتھ لاﺅں؟

ج: 18 سال سے کم عمر بچوں کو لانے کی ضرورت نہیں ہے 18 سال اور اس سے زائد عمر
کے تمام لوگوں (جنہوں نے آپ کے ساتھ اپلائی کیا ہو) کو انٹرویو کےلئے لانا ہو گا۔

س: میں حاملہ ہوں اور اس دوران ایکسرے نہیں کرا سکتی‘ کیا مجھے میڈیکل ٹیسٹ سے مستثنیٰ قرار دیا جا سکتا ہے؟

ج: نہیں! مائیگریشن کےلئے ہر درخواست دہندہ کا میڈیکل ٹیسٹ ضروری ہے۔ حاملہ ہونے کی صورت میں آپ اپنے ڈاکٹر سے مشورہ کریں اگر کسی مخصوص کور کے ساتھ ایکسرے ممکن ہو تو ٹھیک ہے وگرنہ پوری فیملی (بچے سمیت) بچے کی پیدائش کے بعد میڈیکل ٹیسٹ کرائے گی۔ جس کےلئے بچے کے برتھ سرٹیفکیٹ کی تصدیق شدہ کاپی بمعہ ٹرانسلیشن‘ 2پاسپورٹ سائز تصاویر اور فیس کے ہمراہ سفارتخانے کو بھجوانا ہو گا جس پر بچے کےلئے میڈیکل فارم جاری ہو گا۔

س: ہمیں مستقل سکونتی ویزا ملنے کے بعد میری بیوی کو پچھلے ہفتے بچہ پیدا ہوا ہے کیا ہم کینیڈا اس کو ساتھ لے جا سکتے ہیں؟

ج: آپ کی فیملی کا کوئی ممبر ویزے اور میڈیکل کے بغیر ساتھ نہیں جا سکتا‘ حتیٰ کہ نوزائیدہ بچہ بھی‘ اس کےلئے ویزا اپلائی کریں۔ مستقل سکونتی ویزا ملنے کے بعد ہونے والی تبدیلیوں (مثلاً نئے بچے کی پیدائش‘ کسی کو گود لینے‘ بیوی کو طلاق دینے وغیرہ) کے بارے میں 15 روز کے اندر کینیڈین ایمبیسی کو مطلع کرنا ضروری ہے جو کہ آپ کو اس سلسلہ میں ضروری اقدامات کے بارے میں بتائے گی۔

س: امیگریشن کےلئے اپلائی کرنے کے بعد میری شادی ہوئی ہے‘ اب اپنی بیوی کو اس عمل میں کیسے شامل کروں؟

ج: آپ اس تبدیلی سے فوری طور پر ایمبیسی کو بذریعہ فیکس/ ڈاک مطلع کریں اور بیوی کی مکمل درخواست فارم‘ فیس اور تصاویر کے ہمراہ روانہ کریں۔ ویزا سیکشن کو اس کے ساتھ نکاح نامہ اور آپ کی اہلیہ کی جنم پرچی کی تصدیق شدہ کاپیاں (بمعہ ٹرانسلیشن) اور پولیس رپورٹ (جہاں بھی آپ کی اہلیہ 6ماہ سے زائد قیام پذیر رہیںوہاں وہاں کی) درکار ہونگی۔ اس کے ساتھ میڈیکل ٹیسٹ بھی ہو گا۔ واضح رہے کہ اپنی خاندانی حیثیت میں ہونے والی تبدیلی سے مطلع نہ کرنے کی صورت میں آپ کا مستقل سکونتی ویزا مسترد ہو سکتا ہے۔

س: ایک بار کینیڈا میں داخلے کے بعد میں واپس پاکستان آ سکتا ہوں؟

ج: جی ہاں! لیکن اس کےلئے آپ کو مستقل سکونتی کارڈ ملنے کا انتظار کرنا ہو گا۔ دوسری صورت میں آپ کو مخصوص ٹریولنگ دستاویز بنوانی ہو گی تاکہ واپسی پر دوبارہ کینیڈا میں داخل ہو سکیں۔

س: میرا ایک بڑا خاندان ہے مگر میرے تمام بچے کینیڈا مائیگریٹ نہیں ہونگے‘ کیا مجھے فارم میں تمام بچوں کے اندراج کی ضرورت ہے یا صرف انہی کے نام لکھوں جنہوں نے میرے ساتھ جانا ہے؟

ج: دو فارم ہیں‘ جن میں آپ نے بچوں کا اندراج کرنا ہے اور یہ دونوں مختلف ہیں۔ سپلیمنٹری فارم پر تمام بچوں کا اندراج کرنا ضروری ہے جبکہ اپلی کیشن فارم پر (Dependents) بچوں کے نام دیں گے جن کو ویزا جاری ہو گا۔

س: میں سکلڈ ورکر کیٹگری کےلئے اپنے پوائنٹس کا تخمینہ لگا رہا ہوں‘ تعلیمی قابلیت کے پوائنٹس کا کیسے شمار کروں؟

ج: میٹرک پاس نہیں ہیں تو صفر پوائنٹ ملیں گے‘ 10 سال سیکنڈری تعلیم مکمل ہے یعنی کہ میٹرک پاس کیا ہے تو 5 پوائنٹس ہیں۔ فل ٹائم سٹوڈنٹ کے طور پر 12 سالہ تعلیم مکمل کی ہے یعنی کہ انٹر پاس ہیں تو 12 پوائنٹس کے حقدار ٹھہریں گے۔ گریجوایشن کی صورت میں 15 جبکہ ماسٹر ڈگری کے 20 نمبر ہیں اگر ڈاکٹریٹ کی ہو تو تعلیمی قابلیت کے کل 25نمبر ملیں گے۔

س: مجھے فیملی سمیت مستقل سکونتی ویزا مل گیا ہے مگر میں ابھی کچھ عرصہ بعض گھریلو امور نمٹانے کےلئے پاکستان میں ہی رہنا چاہتا ہوں کیا میرے ویزے کی میعاد بڑھ سکتی ہے؟

ج: نہیں! ویزا کی میعاد نہیں بڑھ سکتی‘ آپ کو اس میعاد میں ایک بار کینیڈا جانا ہو گا جس کے بعد مستقل سکونتی کارڈ ملنے پر آپ واپس آ سکتے ہیں۔ آپ کا ویزا Expire ہو گیا تو آپ کو اور آپ کی فیملی کو امیگریشن کے پورے عمل سے دوبارہ گزرنا پڑے گا۔

س: کیا میں اپنی فیملی سے پہلے کینیڈا داخل ہو سکتا ہوں؟
ج: آپ بطور پرنسپل ایپلی کینٹ اپنے

“Dependents” سے پہلے سفر کر سکتے ہیں مگر وہ آپ سے پہلے کینیڈا میں داخل نہیں ہو سکتے۔ وہ آپ کے ساتھ یا پھر آپ کے بعد سفر کر
سکتے ہیں یعنی کہ آپ کا ویزا زائد المیعاد ہوا تو آپ کے تمام اہلخانہ بھی متاثر ہونگے۔

س: میرا ویزا لگ گیا ہے اور میں مستقل سکونت کےلئے کینیڈا جانے والا ہوں وہاں رہنے اور کام کرنے کےلئے کیا تیاری کروں؟

ج: ٹھوس اور حقیقی معلومات کی روشنی میں وہاں رہائش‘ خصوصاً روزگار کےلئے لائحہ عمل تیار کریں۔ پہلے سے وہاں عزیز یا دوست موجود ہیں تو ان سے بات چیت کر کے یہ مرحلہ قدرے آسانی سے طے ہو سکتا ہے۔ آپ کو یہ جاننے کی ضرورت ہو گی کہ وہاں رہائش کےلئے کون سا علاقہ آپ کےلئے بہتر ہے جہاں بچوں کی تعلیم کےلئے سکول اور آپ کے روزگار کا بندوبست ہو سکے۔ بہتر روزگار کے مواقع اور آپ کے کلچر سے ملتے جلتے ماحول والے علاقے کی سرچ میں ویب سائٹ www.goingtocanada.com اور www.canadian informationcentreforinternationalcredentialsسے مدد لی جا سکتی ہے۔
س: مستقل سکونت کےلئے درخواست پہلے سے پراسیس

میں ہو تو پرنسپل درخواست گزار کی تبدیلی ممکن ہے؟

ج: نہیں! ایک بار اپلائی کرنے کے بعد ایسا ممکن نہیں ہے‘ اب اگر آپ کی اہلیہ پرنسپل ایپلی کینٹ بننا چاہتی ہیں تو نئے سرے سے نئی فیس کے ساتھ اپلائی کرنا پڑے گا۔

س: میں سکلڈ ورکر کی کیٹگری میں اپلائی کر رہا ہوں اور مجھے کسی نے وہاں 6000 ڈالر کی نوکری دلانے کی پیشکش بھی کی ہے کیا اس کے مجھے اضافی پوائنٹس ملیں گے؟

ج: اکثر وبیشتر ایجنٹ اور کنسلٹنٹ حضرات اپنی فیس کے عوض اس قسم کی پیشکش کرتے ہیں جو کہ امیدوار کی نااہلی کا سبب بنتی ہے۔ یاد رکھیں کہ کینیڈا کےلئے حقیقی نوکری کی آفرز اس طرح فروخت نہیں ہوتیں یہ ایجنٹ حضرات محض اپنی کمائی کےلئے اس قسم کے حربے استعمال کرتے ہیں اور بوگس دستاویزات فراہم کر دیتے ہیں۔

7 thoughts on “کینیڈا، ویزا گائیڈ چیپٹر3”

  1. Pingback: Hong Kong visa information | Visa Guide

  2. Pingback: USA visa information, Visa Guide ch 1 | Visa Guide

  3. Syed Zia Ul-Qamar

    Dear Admin,
    You work on visa related issue is appreciated, You have to use MS Word for Urdu typing instead of Inpage if you are using. If you are using MS Word than your text direction must be Right to Left. In english our text direction is Left to Right .
    Please take it as humble advice.
    Best Regards.

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: