بیلجیئم، ویزا گائیڈ چیپٹر11

بیلجیئم کا ویزا سسٹم

بیلجیئم ایمبیسی خود ویزا درخواستیں جمع نہیں کرتی بلکہ اس نے یہ کام فیڈیکس وی ایف ایس گلوبل کے سپردکر رکھا ہے۔ اس کے لاہور، کراچی اور اسلام آباد میں دفاتر ہیں ،جہاں پر امیدوار کا خود پیش ہونا ضروری قرار دیا گیا ہے۔ وہاں جانے سے قبل ویب سائٹ پر موجود لنک کے ذریعے اپوائنٹ منٹ لینا پڑتی ہے۔ ایمبیسی درج ذیل کیٹگریز کے ویزے جاری کرتی ہے۔

وزٹ کیٹگری

(i ایئرپورٹ ٹرانزٹ ویزا (ٹائپ اے)۔
(ii ٹرانزٹ ویزا (ٹائپ بی)۔
(iii ٹورسٹ ویزا (ٹائپ سی)۔
(iv بزنس ویزا (ٹائپ سی)۔
(v میڈیکل وجوہات کا ویزا (ٹائپ سی)۔
(vi پرائیویٹ وزٹ ویزا (ٹائپ سی)۔

طویل مدتی قیام کے ویزے

(i فیملی ملاپ (ڈی ٹائپ)۔
(ii سٹڈی ویزا۔
(iii ورک پرمٹ۔
(iv میرج ویزا۔

دستاویزات کی تصدیق

بیلجیم کی ایمبیسی درج ذیل دستاویزات کی تصدیق کراتی ہے پھر ان کی قانونی حیثیت کو تسلیم کیا جاتا ہے۔
(i پولیس کریکٹر سرٹیفکیٹ۔
(ii نکاح نامہ (Marriage Certificate)
(iii جنم پرچی (Birth Certificate)
(iv بی فارم (نادرا کا جاری کردہ خاندانی نمبر کا سرٹیفکیٹ)۔
طلاق نامہ (Divorce Certificate)
(vi ڈیتھ سرٹیفکیٹ۔
(vii میڈیکل سرٹیفکیٹ۔
(viii تعلیمی ڈگریاں + اسناد۔
(ix ویزا درخواست کے ساتھ پیش کئے جانے والی دیگر دستاویزات۔

ویزا اپلائی کرنے کا طریقہ کار

٭ وی ایف ایس گلوبل کے ذریعے تمام دستاویزات اصل حالت میں جمع کرائی جائیں۔
٭ بلجیم کی ایمبیسی قانونی حیثیت کی تصدیق کےلئے صرف دفتر خارجہ کے تصدیق شدہ اصل کاغذات قبول کرتی ہے۔
٭ امیدوار کو کاغذات پر دستخط کےلئے ایمبیسی میں بلایا جائے گا تاکہ وہ ہر طرح سے ذمہ داری قبول کرے۔ اس مقصد کےلئے پاسپورٹ اور اصل شناختی کارڈ ساتھ لے کر جائیں گے۔
٭ تعلیمی اسناد پاکستانی وزارت خارجہ کے علاوہ وزارت تعلیم سے بھی تصدیق شدہ ہونی چاہئیں۔
٭ امیدوار اس مقصد کےلئے اپنی جگہ پر کسی دوسرے شخص کو بھی اتھارٹی لیٹر سمیت پاسپورٹ اور شناختی کارڈ کی فوٹو کاپی کے ساتھ دے کر ایمبیسی بھیج سکتا ہے تاہم اس کےلئے پہلے سے وقت لینا ضروری ہے۔
نوٹ: ٹرانسلیشن فرنچ زبان میں ہونی چاہئے۔ ٹرانسلیشن کےلئے دفتر خارجہ کی تصدیق ضروری نہیں ہے۔ ایمبیسی ٹرانسلیشن اور اصل دونوں دستاویزات کی تصدیق کرے گی اور دونوں کی فیس وصول کی جائے گی جو کہ فی دستاویز 1180/- روپے ہے۔

بیلجیئم ایمبیسی کے منظور شدہ ٹرانسلیشن سنٹرز

Alliance Francaise de Lahore 155, Scotch Corner, Street 3,
Upper Mall, Lahore.
Tel: 042-5874301-3
Fax: 042-5874304
E-mail: aflhr@brain.net.pk
2. Alliance Francaise de Karachi
Plot St-1, Block 8, Scheme 5,
Clifton, Karachi.
Tel: 021-5873402
Fax: 021-5874302
E-mail: info@afkarachi.com
3. French Center Faisalabad
Ahmed Plaza, 3rd Floor, Bilal Road,
Civil Lines, Faislabad.
Tel: 041-2634187
Fax: 041-2634188
E-mail: faisalabad@aflahore.org
4. Alliance Francaise de Islamabad
Tel: 051-2825218-9
Fax: 051-9213730
E-mail: contact@afislamabad.org
Web: www.afislamabad.org

ٹوریسٹ ویزا

بلجیم کی ایمبیسی سیر وتفریح‘ رشتہ داروں سے ملنے اور دیگر قلیل مدتی مقاصد کےلئے 90روز تک کا ٹورسٹ ویزا جاری کرتی ہے جس کےلئے سپانسر شپ ضروری قرار دی گئی ہے۔ وزٹ کےلئے بلجیم کی ٹریول ایجنسیاں بھی سپانسر کرتی ہیں۔وی ایف ایس سنٹر پر درج ذیل دستاویزات کے ساتھ ٹورسٹ ویزا کےلئے درخواست اپلائی کریں گے۔
٭ کم از کم 3ماہ کےلئے کارآمد اصل پاسپورٹ۔
٭ پاسپورٹ اور شناختی کارڈ کی ایک ایک فوٹو کاپی۔
٭ مکمل پُر شدہ شینگن ویزا درخواست فارم (ایمبیسی‘ فیڈیکس یا دونوں کی ویب سائٹس سے حاصل کیا جا سکتا ہے)۔
٭ 2عدد پاسپورٹ سائز تازہ تصاویر۔
٭ اصل دعوتی/ سپانسر لیٹر۔
٭ امیدوار ملازم ہے تو ملازمت اور چھٹیوں کا سرٹیفکیٹ‘ اپنا کاروبار ہے تو اس کی رجسٹریشن اور ٹیکس کے کاغذات۔
٭ کنفرم ایئر ٹکٹ
٭ ہوٹل میں کمرے کی بکنگ (اصل + ایک کاپی)۔
٭ بلجیم میں قیام کے دوران مصروفیات کا مکمل پروگرام (اصل + ایک کاپی)۔
٭ دورے کےلئے معقول رقم کے انتظام کا ثبوت۔
(ٹریول چیکس یا کریڈٹ کارڈ کی شکل میں + بنک سٹیٹمنٹ)۔
٭ 30ہزار یورو مالیت کی ٹریول ہیلتھ انشورنس پالیسی۔
درخواست جمع کرانے کے بعد آپ کو انٹرویو کےلئے بلایا جائے گا۔ کاغذات مکمل ہوئے تو ایک ماہ کے اندر کیس کا فیصلہ ہو جاتا ہے۔ اگر کسی شینگن ملک کا پہلے سے ویزا لگا ہوا ہو تو 2ہفتوں میں ویزا جاری کر دیا جائے گا۔

ایئرپورٹ ٹرانزٹ

کسی غیر ملکی نے بلجیم کے راستے کسی اور ملک کا سفر کرنا ہو تو چند گھنٹوں کے عارضی قیام کےلئے ایئرپورٹ ٹرانزٹ ویزا جاری کیا جاتا ہے۔ اس کےلئے طریقہ کار کے مطابق پہلے اس ملک کا ویزا حاصل کیا جائے جو اصل منزل ہے اس کیٹگری کے ویزا کےلئے درج ذیل کاغذات ضروری ہیں۔
(i اصل پاسپورٹ جس پر اگلے ملک کا ویزا لگا ہوا ہو۔
(ii پاسپورٹ اور شناختی کارڈ کی فوٹو کاپی۔
(iii ویزا درخواست فارم۔
(iv ایک عدد پاسپورٹ سائز فوٹو۔
(v ریٹرن ایئر ٹکٹ (اصل + ایک فوٹو کاپی)۔
(vi پاکستانی شہری نہ ہونے کی صورت میں پاکستان کا رہائشی پرمٹ اور ری انٹری ویزا۔

بزنس ویزا

بزنس کمیونٹی کے لوگ جو بیلجیئم کی کمپنیوں کے ساتھ امپورٹ ایکسپورٹ کے سلسلے میں کسی معاہدے کےلئے وہاں جانے کے خواہشمند ہوں‘ وہاں اپنی برانچ قائم کرنا چاہتے ہوں‘ کسی کاروباری نمائش یا سیمینار میں شرکت کرنی ہو یا پھر مشینری وغیرہ خرید کرنے کےلئے جا رہے ہوں وہ بزنس ویزا کےلئے اپلائی کریں گے۔ مذکورہ بالا تمام مقاصد کےلئے متعلقہ بلجیئن کمپنی کے ساتھ خط وکتابت (بذریعہ ای میل/ فیکس) ضروری امر ہے اور یہی ویزے کی اصل بنیاد بنتا ہے۔ بزنس ویزے کی زیادہ سے زیادہ میعاد 90روز ہے اس کےلئے درج ذیل دستاویزات کے ساتھ اپلائی کرنا پڑے گا۔
٭ کم از کم 3ماہ کےلئے قابل استعمال اصل پاسپورٹ۔
٭ ویزا فارم (مکمل پُرشدہ)۔
٭ ایک پاسپورٹ سائز حالیہ تصویر۔
٭ پاسپورٹ کے تمام صفحات اور شناختی کارڈ کی فوٹو کاپی۔
٭ بلجیم کی کمپنی کا اصل دعوتی خط بمعہ ایک فوٹو کاپی۔
٭ پاکستانی کمپنی کا نمائندہ ویزے کےلئے درخواست دے رہا ہے تو ملازمت کا سرٹیفکیٹ جس میں دورے کا مقصد بیان کیا گیا ہو۔ مالک خود جانا چاہتا ہے تو کمپنی کی رجسٹریشن جو ملکیت ظاہر کرے‘ چیمبر آف کامرس کی ممبر شپ اور ٹیکس کے کاغذات ساتھ لگائیں۔
٭ ریٹرن ایئر ٹکٹ‘ کنفرمیشن کے ساتھ (اصل + ایک فوٹو کاپی)۔
٭ ٹریول چیکس اور کریڈٹ کارڈ کی شکل میں خرچے کےلئے وافر رقم کی موجودگی کا ثبوت‘ بنک سٹیٹمنٹ بھی جمع کرائیں یا
٭ بلجیئن کمپنی کی طرف سے دورے کے تمام اخراجات برداشت کرنے کا لیٹر۔
٭ رہائش کےلئے ہوٹل بکنگ جو کہ درخواست گزار کے نام پر ہو۔
٭ شینگن ممالک کےلئے منظور شدہ انشورنس کمپنی سے کرائی گئی کم از کم 30ہزار یورو کی ٹریول ہیلتھ انشورنس پالیسی بمعہ فوٹو کاپی۔

میڈیکل وجوہات/ علاج معالجے کا ویزا

یہ بھی وزٹ ویزا ہی کی ایک قسم ہے تاہم یہ سیر وتفریح اور کاروبار کی بجائے کسی بیماری کے علاج کرانے کےلئے بلجیم جانے کی غرض سے جاری کیا جاتا ہے۔ اس کی ابتدائی مدت 3ماہ ہے جس میں حالات وواقعات کے مطابق توسیع ممکن ہے۔ بلجیم میں علاج کےلئے جانے سے پہلے ضروری ہے کہ پاکستانی ماہر ڈاکٹر سے معائنہ کرایا گیا ہو اور اس نے بلجیم جانے کی سفارش کی ہو۔ سفارتخانہ نے اس غرض کےلئے مختلف شہروں میں ان ڈاکٹروں کو نامزد کر رکھا ہے۔ تمام امیدواروں کو ویزا اپلائی کرنے سے پہلے ان سے معائنہ کرانا ضروری ہے۔

بلجیئن ایمبیسی کے منظور شدہ ڈاکٹرز

Lahore
Dr. Zahid Khan,
Ammar Medical Complex,
8 Jail Road, Main Gulberg, Lahore.
Tel: 042-5754916-19
Islamabad
Dr. Ahmed Shahab,
House No.4, Street No.63,
F7-/3 Islamabad.
Tel: 0300-8541212, 051-8255891
Dr. Mohammad Arshad Khan,
20, First St. F-6/3,
Islamabad.
Tel: 0300-5004999, 051-2829666
Karachi
Dr. Roohina Sattar,
NMI Hospital, 100 Depot Line,
Mansfield Street, Saddar, Karachi.
Tel: 021-2221675, 021-2258848,
Dr. Shahrukh Hansotia
12 Avari Plaza,
Avari Towers Hotel,
Shahrah-e-Faisal, Karachi.
Tel: 021-5682421
Quetta
Dr. Hamida Khanum Ikhtriar,
Dr. Nauroz Ali Gulzari,
Gulzari Clinic, Alamadar Road,
Quetta.Tel: 081-2663997
Dr. Nasib Ullah Shah,
Room 26 Saleem Medical Complex Hospital,
Jinnah Road, Quetta.
Tel: 081-2830777, 4001626

منظور شدہ ڈاکٹر معائنہ کے بعد لیٹر جاری کرے گا جس میں بیماری کی نوعیت‘ پچھلے علاج کی تفصیلات اور بلجیم میں علاج کے حوالے سے اپنی سفارشات لکھے گا۔ جس کے بعد بلجیم کے کسی ہسپتال‘ بیماری سے متعلقہ کلینک یا ماہر ڈاکٹر سے رابطہ کرنا ہو گا اور علاج کےلئے حامی بھرنے پر مطلوبہ فیس کا کچھ حصہ جمع کرایا جائے گا۔ جس پر وہ ہسپتال یا ڈاکٹر وہاں سے اپنا لیٹر بھیجے گا جس میں علاج کی مدت اور اخراجات وغیرہ بیان کئے گئے ہوں گے۔ اس کے ملنے کے بعد ویزا کی درخواست دی جائے گی۔ یاد رکھیں کہ ایمبیسی کے منظور شدہ ڈاکٹر حضرات آپ کو بلجیم کے ہسپتالوں اور ڈاکٹروں سے رابطے میں بھی اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔ ویزا درخواست کےلئے یہ تمام دستاویزات درکار ہوں گی۔
٭ آئندہ 3ماہ کےلئے کارآمد اصل پاسپورٹ۔
٭ شناختی کارڈ اور پاسپورٹ کی فوٹو کاپیاں۔
٭ مکمل پُرشدہ ویزا فارم جو کہ ایمبیسی یا اس کی ویب سائٹ سے حاصل کیا جائے گا۔
٭ ایک عدد پاسپورٹ سائز تصویر (6ماہ سے زائد پرانی نہ ہو)۔
٭ بیلجیئم کے کسی ہسپتال یا ماہر ڈاکٹر کا دعوتی خط۔
٭ مریض ملازمت کر رہا ہو تو اس کا سرٹیفکیٹ + چھٹی کی منظوری کا لیٹر‘ اپنا کاروبار ہو تو اس کے ملکیتی ثبوت۔
٭ ریٹرن ایئر ٹکٹ (کنفرمیشن کے ساتھ) + ایک عدد فوٹو کاپی۔
٭ پاکستانی ڈاکٹر کا لیٹر جس میں تصدیق کی گئی ہو کہ امیدوار کا پاکستان میں معقول علاج ممکن نہیں ہے۔
٭ علاج اور دیگر اخراجات کےلئے معقول رقم کی موجودگی کا ثبوت یا کسی اور شخص کی جانب سے اخراجات اپنے ذمہ لینے کا بیان حلفی بمعہ بنک سٹیٹمنٹ اور جائیداد کے ملکیتی کاغذات۔
٭ منظور شدہ انشورنس کمپنی سے کرائی گئی ٹریول انشورنس پالیسی (مالیت 30ہزار سے کم نہ ہو)۔

پرائیویٹ وزٹ ویزا

اس کیٹگری میں امیدوار کو بلجیم کے کسی شہری‘ مستقل رہائشی پرمٹ ہولڈر کی مکمل سپانسر شپ حاصل ہوتی ہے جس میں تمام اخراجات وغیرہ شامل ہوتے ہیں سپانسر کےلئے قریبی رشتہ دار کی شرط بھی رکھی گئی ہے جس میں میاں بیوی اور بچے ہی شامل ہیں تاہم بعض کیسوں میں بھائی بہن اور دیگر قریبی رشتہ داروں کو بھی ویزا مل جاتا ہے۔ سپانسر کےلئے یہ شرط رکھی گئی ہے کہ اس کی کم از کم ماہانہ آمدن ایک ہزار یورو ہو اور وہ مہمان کا 200یورو ماہانہ کم از کم خرچ برداشت کر سکے۔ آرٹیکل 3کے تحت مخصوص پرفارما پر بیان حلفی دینا ہو گا۔

درکار دستاویزات

ٹورسٹ ویزا کےلئے مطلوبہ دستاویزات کے علاوہ رشتہ دار سپانسر بیان حلفی بمعہ پاسپورٹ/ رہائشی پرمٹ کی فوٹو کاپی اور امیدوار کے اس سے رشتہ کا ثبوت درکار ہو گا جس کےلئے فارم ب اور جنم پرچیاں جبکہ میاں بیوی کی صورت میں نکاح نامہ ساتھ لگانا ہو گا۔

اہم سوالات بمعہ جوابات

س: یورپی اکنامک ایریا (EEA) سے کون سے ممالک تعلق رکھتے ہیں؟
ج: آسٹریا‘ بلجیم‘ بلغاریہ‘ چیک ری پبلک‘ ڈنمارک‘ اسٹونیا‘ فن لینڈ‘ فرانس‘ جرمنی‘ یونان‘ ہنگری‘ آئس لینڈ‘ آئر لینڈ‘ اٹلی‘ لیٹویا‘ لیتھوآنیا‘ لکسمبرگ‘ مالٹا‘ نیدر لینڈز‘ ناروے‘ پولینڈ‘ پرتگال‘ رومانیہ‘ سلوواکیا‘ سلووینیا‘ سپین‘ سویڈن اور برطانیہ یورپی اکنامک ایریا میں شامل ہیں۔
س: کیا میں بیلجیئم کے ٹورسٹ ویزا پر کسی اور شینگن ملک میں جا کر دوبارہ بلجیم میں داخل ہو سکتا ہوں؟
ج: ایک عام شینگن ویزا کسی ملک میں صرف ایک بار انٹری کےلئے ہوتا ہے اس پر آپ دوسرے شینگن ممالک میں جا سکتے ہیں لیکن واپس اسی ملک میں آنے کا مطلب دوسری بار انٹری ہو گا جس کےلئے ملٹی پل ویزا ہونا ضروری ہے۔ لہٰذا آپ بلجیم سے آگے کسی اور شینگن ملک میں جائیں گے تو واپسی پر بلجیم میں دوبارہ انٹری اسی ویزا پر ممکن نہیں ہے۔
س: قلیل مدتی ویزا کےلئے پروگرام سے کتنے روز قبل اپلائی کریں؟
ج: 90روز تک کے قلیل مدتی وزٹ‘ بزنس اور دیگر ویزوں کے اجراءمیں عموماً 2سے 4ہفتے کا وقت لگتا ہے لہٰذا آپ ایک ماہ پہلے اپلائی کریں۔
س: مالی امداد کی ضمانت (Plege of Financial Support) کیا ہے؟
ج: اگر ویزا کا امیدوار اپنے دورہ کے اخراجات خود برداشت کرنے کے ثبوت فراہم کرنے سے قاصر ہو تو سپانسر اس بات کی بھی ضمانت دیتا ہے کہ تمام اخراجات وہ خود کرے گا۔ اس کےلئے بیلجیئم کے شہری یا رہائشی پرمٹ ہولڈر سپانسر کو مخصوص فارم (Annex 3 bis) پر حلف یعنی بیان حلفی دینا پڑتا ہے۔
س: دعوتی خط (Letter of Invitation) کیا ہے؟
ج: یہ کوئی سرکاری دستاویز نہیں ہے بلکہ ایک نجی قسم کا خط ہی ہوتا ہے جس میں بلجیئن شہری یا رہائشی پرمٹ ہولڈر جس غیر ملکی کو بلا رہا ہوتا ہے اس کا مکمل تعارف‘ اپنے ساتھ تعلق‘ بیلجیئم میں بلانے کا مقصد‘ اس کےلئے درکار وقت اور وہاں ٹھہرانے کے انتظام سے متعلق تمام باتیں وضاحت کے ساتھ بیان کرتا ہے۔
س: کیا مجھے ویزا کے اجراءسے پہلے پیشگی میں ایئرٹکٹ اور ٹریول انشورنس پالیسی حاصل کرنا ہو گی؟
ج: ویزا اپلائی کرنے کے بعد ویزاکی منظوری ہونے پر ایمبیسی کے کہنے پر آپ یہ دونوں چیزیں حاصل کر کے جمع کرائیں گے۔ ریٹرن ایئر ٹکٹ آپ کے نام پر اور ناقابل تبدیلی ہونی چاہئے۔ واضح رہے کہ ایمبیسی ٹکٹ کی بکنگ اس سے پہلے بھی طلب کر سکتی ہے۔
س: کون کون سے ممالک شینگن کلب میں شامل ہو چکے ہیں؟
ج: لکسمبرگ‘ سپین‘ سویڈن‘ پرتگال‘ ناروے‘ نیدر لینڈز‘ اٹلی‘ آئس لینڈ‘ یونان‘ فرانس‘ جرمنی‘ فن لینڈ‘ ڈنمارک‘ بلجیم‘ آسٹریا‘ اسٹونیا‘ چیک ری پبلک‘ ہنگری‘ لیٹویا‘ لیتھوونیا‘ مالٹا‘ پولینڈ‘ سلوواکیا‘ سلووینیا اور سوئٹزر لینڈ۔
س: بیلجیئم پہنچنے پر مجھے کیا کیا اقدامات کرنا ہونگے؟
ج: بیلجیئم پہنچنے کے بعد جس علاقہ میں رہائش اختیار کرنا ہو فوری طور پر اس علاقہ کے میونسپلٹی آفس میں جا کر اپنا اندراج کرائیں جس پر آپ کو اعلامیہ دیا جائے گا اگر آپ نے کسی ہاسٹل‘ ہوٹل میں ٹھہرنا ہے یا ہسپتال میں علاج کےلئے داخل ہونا ہے تو میونسپلٹی کی رجسٹریشن کی ضرورت نہیں ہو گی۔
س: کیا میں کسی اور ملک کے راستے بلجیم میں داخل ہو سکتا ہوں؟
ج: جی ہاں! آپ کا ویزا تمام شینگن ممالک کےلئے کارآمد ہے‘ لہٰذا آپ کسی اور شینگن ملک میں جانے کے بعد بھی بلجیم میں آ سکتے ہیں۔
س: ویزا درخواست مسترد ہونے پر اپیل کی جا سکتی ہے؟
ج: جی ہاں! اپیل کی جا سکتی ہے تاہم ویزا مسترد ہونے کی وجوہات امیدوار کو ہی مہیا کی جائیں گی جو کہ اس لیٹر میں درج طریقہ کار کے مطابق 30 روز کے اندر اپیل دائر کرے گا۔

بیلجیئم میں حصول تعلیم

بیلجیئم میں مختلف زبانیں بولنے والی اقوام اپنے اپنے علاقوں میں لوگوں کو خدمات جیسے کہ تعلیم کی فراہمی سے متعلق فیصلے کرنے میں بااختیار ہیں۔ فلیمش کمیونٹی ڈچ زبان بولے جانے والے علاقوں میں تعلیم کی ذمہ دار ہے۔ اسی طرح فرانسیسی کمیونٹی بلجیم کے ان علاقوں میں تعلیم سے متعلق فیصلے کرنے میں آزاد ہے جہاں فرنچ بولی جاتی ہے۔ اسی طرح دیگر قوموں کو بھی اختیارات حاصل ہیں۔
انٹرنیشنل طلباءکی بڑی تعداد انگریزی ذریعہ تعلیم کو ترجیح دیتی ہے۔ بلجیم کے تعلیمی اداروں میں بھی انگریزی میں کورسز موجود ہیں تاہم طلباءکو مختلف زبانوں کے تعلیمی اداروں کی ویب سائٹس سے اپنے مطلوبہ کورس اور فیسوں سمیت دیگر معلومات حاصل کرنا ہوں گی جس کے بعد داخلہ کےلئے رجسٹریشن کرائیں گے۔
ہائیر ایجوکیشن کےلئے فلیمش کمیونٹی (Flemish Community) کے تعلیمی اداروں کی شہرت ہے ان کے بارے میں www.ond.vlaanderen.be/english سے معلومات حاصل کی جا سکتی ہیں۔ اس سائٹ سے ملنے والی معلومات کے مطابق فلیمش کمیونٹی کے تعلیمی ادارے غیر ملکی ڈپلوموں اور ان کی ڈگریوں کو ان کے ممالک کی طرح تسلیم کرتے ہیں۔ فرانسیسی کمیونٹی میں پڑھنے کےلئے تمام معلومات اس کی ویب سائٹ www.enseignement.be/citoyens/index.asp سے مل جائیں گی جبکہ جرمن بولنے والی کمیونٹی کے تعلیمی اداروں سے متعلق رہنمائی کےلئے آپ ویب سائٹ www.unterrichtsverwaltung.be وزٹ کریں گے۔
مالی معاونت
بیلجیئم کی غیر سرکاری تنظیمیں غیر ملکی طلباءکو مالی امداد بھی فراہم کرتی ہیں ان تنظیموں کی فہرست اور رابطے بلجیئن ڈویلپمنٹ کارپوریشن کی ویب سائٹ www.dgdc.be/en/dgdc/grants سے مل سکتے ہیں۔

سٹڈ ی ویزا

سٹڈی ویزا کے حصول کےلئے آپ تعلیمی ادارے کا انتخاب کر کے وہاں داخلہ/ انٹرولمنٹ کرائیں گے اور داخلے کےلئے رضامندگی کا خط (Acceptance Letter) موصول ہونے کے بعد درج ذیل دستاویزات لگا کر ویزا کی درخواست جمع کرائیں گے۔
٭ مکمل پُر شدہ ویزا فارم۔
٭ پچھلے 5سال کا کریکٹر سرٹیفکیٹ جو کہ ضلعی پولیس کی طرف سے جاری شدہ اور دفتر خارجہ سے تصدیق شدہ ہو۔
٭ میڈیکل سرٹیفکیٹ (ایمبیسی کا منظورشدہ ڈاکٹر معائنے کے بعد جاری کرے گا)۔
٭ کسی منظور شدہ یونیورسٹی/ کالج میں فل ٹائم سٹڈی کورس میں انرولمنٹ یا داخلے کا سرٹیفکیٹ یا یونیورسٹی میں داخلہ ٹیسٹ کےلئے رجسٹریشن کا سرٹیفکیٹ (فرنچ کمیونٹی کی یونیورسٹیوں میں فرنچ لینگوئج کا ٹیسٹ لیا جاتا ہے جبکہ ڈچ یونیورسٹیوں میں انجینئرنگ اور میڈیکل میں داخلے کےلئے انٹری ٹیسٹ ہوتا ہے)۔
٭ تعلیمی‘ رہائشی اور دیگر اخراجات کےلئے معقول رقم کی موجودگی کا ثبوت‘ تمام اخراجات خود برداشت کرنا ہوں تو بنک سٹیٹمنٹ یا سکالر شپ کی صورت میں متعلقہ محکمہ کی طرف
سے جاری ہونے والا لیٹر اور بلجیم کی حکومت کے حق میں بیان حلفی جس میں اخراجات کی ذمہ داری لی گئی ہو‘ یہی طریقہ کسی سپانسر کی صورت میں بھی اختیار کیا جائے گا۔
٭ ویزا فیس کی رسید۔
٭ کم از کم ایک سال کےلئے کارآمد پاسپورٹ + پہلے 6صفحات کی دو دو فوٹو کاپیاں۔
٭ تعلیم اور دفتر خارجہ سے تصدیق شدہ اسناد اور ڈگریاں۔
٭ تازہ پاسپورٹ سائز تصاویر۔
٭ دفتر خارجہ کا تصدیق شدہ برتھ سرٹیفکیٹ۔
پرائمری اور سیکنڈری سکول کی تعلیم کےلئے طریقہ
پرائمری اور سیکنڈری سکول کی تعلیم کےلئے چونکہ امیدوار نابالغ ہو گا اس لئے درج ذیل خصوصی اقدامات کی ضرورت ہو گی۔
٭ امیدوار کا بھائی‘ بہن‘ ماموں‘ چچا‘ دادا‘ دادی یا کزن بیلجیئم کا شہری یا مستقل رہائشی پرمٹ ہولڈر ہو جو کہ اس کی وہاں پر بطور سرپرست ذمہ داری قبول کرے۔
٭ امیدوار مطلوبہ کورس میں اپنے ملک اور قریبی ہمسایہ ملک میں داخلہ لینے سے قاصر ہو اور بوجوہ بلجیم میں پڑھنے کےلئے جانا چاہتا ہو۔
نوٹ: ویزا درخواست جمع کرانے کے بعد سکالر شپ کی صورت میں ویزا کے اجراءمیں 4سے 6ہفتے لگتے ہیں جبکہ دیگر تمام طلباءکے کیسوں کا فیصلہ 3سے 4ماہ کے دوران ہوتا ہے لہٰذا کورس شروع ہونے سے کم از کم 4ماہ قبل اپلائی کرنا چاہئے۔

ورک پرمٹ ویزا

بلجیم میں کام کرنے کی غرض سے جانے کےلئے پہلے پاکستان میں ہی ڈی ٹائپ طویل المدت قیام کے ویزے کی درخواست دینا ہو گی جس کےلئے دیگر کاغذات کے علاوہ ورک پرمٹ بنیادی دستاویز ہے۔ ورک پرمٹ بلجیم میں بزنس کرنے والا کوئی آجر‘ فیکٹری یا فرم کا مالک‘ وہاں ریجنل ایمپلائمنٹ سروس سے کسی غیر ملکی کو بلانے کےلئے حاصل کرتا ہے۔ بعض مخصوص شعبوں کے علاوہ عموماً روک پرمٹ اسی صورت جاری کئے جاتے ہیں جب اس سیکٹر میں مقامی سطح پر سٹاف موجود نہ ہو۔
بلجیم سے ورک پرمٹ آنے پر ہی اس کیٹگری کے ویزا کےلئے اپلائی کیا جا سکتا ہے۔ ورک ویزا پرمٹ کی مدت کے مطابق جاری کیا جاتا ہے۔ عام طور پر پرائیویٹ معاہدے ایک یا دو سال کے ہوتے ہیں جو کہ کام کے دوران قابل توسیع ہوتے ہیں حتیٰ کہ 5 سے 10 سال تک وہاں رہائش پذیر رہنے کے بعد لوگ مستقل رہائشی پرمٹ کے حقدار ہو جاتے ہیں اور بلجیم کے شہریوں کے مطابق مراعات حاصل کرنے لگتے ہیں۔

صحافیوں کےلئے ورک پرمٹ

پیشہ ور صحافی جو کہ کسی غیر ملکی فنی گروپ‘ اخبار یا چینل کی طرف سے خدمات سرانجام دینے کےلئے بلجیم جانا چاہتے ہوں ان کو بھی معاہدے کی طے شدہ مدت کےلئے ورک پرمٹ جاری ہوتا ہے اس کےلئے درج ذیل دستاویزات کی ضرورت ہو گی۔
٭ امیدوار کی عمر 21سال سے زائد ہونی چاہئے جس کےلئے وزارت خارجہ سے تصدیق شدہ جنم پرچی اور اس کی ٹرانسلیشن ویزا درخواست کے ساتھ لگانی ہو گی۔
٭ امیدوار کو ثابت کرنا ہو گا کہ وہ فل ٹائم صحافت کے شعبہ سے ہی منسلک ہے اس کےلئے موجود اور سابقہ ملازمتوں کے لیٹرز اور کم از کم تجربہ کے 2سالہ سرٹیفکیٹ منسلک کئے جائیں گے۔
٭ انٹرنیشنل نیوز ایجنسی/ گروپ کے ساتھ ملازمت کا معاہدہ۔
٭ فری لانس جرنلسٹ کےلئے بھی 2سالہ تجربہ ضروری ہے جس کا ثبوت کسی صحافتی ادارے یا نیوز ایجنسی کے سربراہ کا جاری کردہ سرٹیفکیٹ ہو گا۔ اگر بیلجیئم میں جا کر ملازمت کے علاوہ اپنا صحافتی کام کرنا ہے تو امیدوار کو اس عرصہ کے اخراجات برداشت کرنے کےلئے وافر رقم کی موجودگی کا ثبوت بھی دینا ہو گا۔
٭ ایمبیسی کے منظور شدہ ڈاکٹر کا جاری کردہ میڈیکل سرٹیفکیٹ۔
٭ پولیس کا جاری کردہ 5سال کا کریکٹر سرٹیفکیٹ (فارن آفس سے تصدیق شدہ)۔ ٭ ماہانہ آمدن/ سیلری سلپس یا بنک اکاﺅنٹ سٹیٹمنٹ کی صورت میں صحافی کو اگر ڈی ٹائپ ویزا مل جاتا ہے تو اسے بلجیم پہنچ کر برسلز میں دفتر خارجہ کی پریس سروس سے رابطہ کرنا ہو گا جو کہ عارضی صحافتی کارڈ جاری کرے گی جس کے باعث صحافیوں کو
ملنے والی سہولتیں میسر آ سکیں گے۔

کمرشل سرگرمیوں کے بغیر ڈی ٹائپ ویزا

ایسے صاحب حیثیت لوگ جو کہ بغیر کوئی کام کئے بلجیم میں رہنے کے خواہشمند ہوں ان کو بھی طویل مدتی ڈی ٹائپ رہائشی ویزا جاری کیا جاتا ہے ایسے لوگوں کو ثابت کرنا ہو گا کہ ان کے پاس وافر رقم موجود ہے اور سالانہ بنیادوں پر ہیلتھ انشورنس کرائیں گے۔ اس کیٹگری کے ویزوں کےلئے ایمبیسی ہر کیس کو علیحدہ علیحدہ کیس ٹو کیس جانچتی ہے اور فیصلے کرتی ہے۔ ڈی ٹائپ ویزا کےلئے دیگر شرائط بھی لاگو ہوتی ہیں۔

فیملی ملاپ, ڈی ٹائپ ویزا

بلجیم کی شہریت رکھنے والے اور مستقل رہائشی پرمٹ ہولڈرز کے قریبی رشتہ دار یعنی کہ شوہر‘ بیوی‘ 18سال سے کم عمر بچے‘ والد‘ والدہ یا دادا‘ دادی ان کے ساتھ رہ سکتے ہیں جس کےلئے ڈی ٹائپ ویزا جاری ہوتا ہے جس کی مدت ایک‘ دو یا تین سال ہو سکتی ہے۔ جس کے بعد اس میں توسیع ہوتی رہے گی تا وقت کہ مستقل رہائشی پرمٹ کےلئے اپلائی کر دیا جائے۔ اس کیٹگری کے ویزے کے حصول کےلئے درج ذیل دستاویزات کے ساتھ اپلائی کیا جاتا ہے۔
(i ہر امیدوار کےلئے 2مکمل پُرشدہ ویزا درخواست فارم۔
(ii 3حالیہ پاسپورٹ سائز تصاویر۔
(iii اصل پاسپورٹ + پہلے 6صفحات کی دو دو فوٹو کاپیاں۔
(iv امیدوار کے میل ایڈریس اور رجسٹرڈ ڈاک کے ٹکٹ لگے ہوئے۔
9″ x 6.5″ سائز کے 3لفافے۔
(v ویزا/ ہینڈلنگ فیس کا ڈرافٹ۔
(vi اصل نکاح نامہ + فرنچ ٹرانسلیشن۔ امیدوار کا اصل برتھ سرٹیفکیٹ بمعہ ٹرانسلیشن۔
(viii بلجیم میں رہائش پذیر رشتہ دار کے رہائشی کارڈ یا قومی شناختی کارڈ کی فوٹو کاپی۔
(ix 18سال سے زائد عمر کے امیدواروں کےلئے 5سال کا کریکٹر سرٹیفکیٹ جو کہ ضلعی پولیس افسر کی طرف سے جاری کیا گیا ہو۔
(x اگر پہلے خاوند/ بیوی کو طلاق دے کر بلجیم کے رہائشی سے دوسری شادی کی ہے تو طلاق نامہ بمعہ ترجمہ۔
(xi اگر بہن‘ بھائی اپنے والد یا والدہ کی وفات کے بعد بلجیم میں رہنے جا رہے ہیں یا پہلی بیوی/ شوہر کے مرنے کے بعد بلجیم کے رہائشی سے شادی کی ہے تو اصل ڈیتھ سرٹیفکیٹ بمعہ ترجمہ۔
(xii امیدوار کا نادرا سے جاری شدہ بی فارم بمعہ ٹرانسلیشن۔

ضروری نوٹ

تمام دستاویزات پاکستانی دفتر خارجہ سے تصدیق شدہ ہونی چاہئیں اور اصل حالت میں ہی جمع کرائی جائیں۔ تمام امیدوار مذکورہ بالا تمام دستاویزات کا الگ الگ سیٹ بنا کر جمع کرائیں۔ فیس کا ڈرافٹ ایمبیسی آف بلجیم‘ ہاﺅس نمبر 14‘ سٹریٹ نمبر 17‘ سیکٹر ایف 7/2 اسلام آباد کے نام پر بنوانا ہو گا۔

بیلجیئم میں شادی کےلئے ویزا

ایسے غیر ملکی جو بلجیم کے شہری یا مستقل رہائشی سے شادی کرنے کےلئے وہاں جانا چاہتے ہوں ان کو شروع میں سی کیٹگری کے ویزا کےلئے اپلائی کرنا ہو گا اور وہ یہ دستاویزات ویزا درخواست کے ساتھ لگا کر اپلائی کریں گے۔
٭ ایمبیسی کے منظور شدہ فزیشن کا جاری کردہ میڈیکل سرٹیفکیٹ۔
٭ 5سال کا پولیس سے حاصل کردہ کریکٹر سرٹیفکیٹ۔
٭ امیدوار کے پاس اخراجات کےلئے وافر رقم کی موجودگی کا ثبوت یا بلجیم کے رہائشی کی طرف سے اخراجات کی ذمہ داری لینے کا بیان حلفی جو کہ میونسپل اتھارٹی کے پرفارما پر ہو گا۔
٭ امیدوار کا 3ماہ تک کارآمد پاسپورٹ۔
٭ پاسپورٹ اور شناختی کارڈ کی فوٹو کاپیاں۔
٭ ویزا فارم + 3پاسپورٹ سائز تصاویر۔
٭ بلجیم میں رہائش پذیر منگیتر کا (Annexe 3 bis) بیان حلفی + شناختی کارڈ کی فوٹو کاپی۔
٭ بلجیم کے لوکل ٹاﺅن ہال میں شادی کےلئے وقت کے نوٹیفکیشن کا سرٹیفکیٹ۔
٭ ویزا فیس کا ڈرافٹ یا رسید۔

ڈی این اے ٹیسٹ

فیملی ملاپ کے کیس میں ایمبیسی ویزا درخواست پر ضروری کارروائی اور امیدوار کے انٹرویو کے بعد اپنے دفتر خارجہ کی امیگریشن سروس روانہ کر دیتی ہے جہاں متعلقہ شہری کو طلب کر کے اس کا انٹرویو کیا جاتا ہے۔ امیگریشن سروس ضرورت محسوس ہونے پر سپانسر اور امیدوار کا ڈی این اے ٹیسٹ کرا سکتی ہے جس کے اخراجات دونوں کو خود برداشت کرنا ہوں گے۔ یہ ہر کیس کےلئے ضروری نہیں ہے صرف ان کیسوں میں اس کی سفارش کی جاتی ہے جن میں رشتہ کا ثبوت ناکافی سمجھا جائے۔ بعدازاں امیگریشن سروس سپانسر کو ڈی این اے ٹیسٹ کے رزلٹ سے آگاہ کرے گا۔ یہ رزلٹ اس کیس کےلئے قابل استعمال ہو گا کسی اور مقصد کےلئے استعمال نہیں کیا جائے گا۔

بیلجیئم کی شہریت

18سال یا زائد عمر کے غیر ملکی جو کہ کم از کم تین سال تک بلجیم میں رہائشی پرمٹ پر رہے ہوں اور ان کا اس دوران کردار صاف ستھرا رہا ہو یعنی کہ کوئی کیس وغیرہ نہ بنا ہو وہ شہریت کےلئے اپلائی کرنے کے اہل ہیں۔ سیاسی مہاجرین اور بے وطن افراد کےلئے قیام کی مدت 2سال رکھی گئی ہے۔ شہریت کےلئے مقامی میونسپلٹی کے رجسٹرار کو درخواست دی جائے گی جو کہ آگے چیمبر آف ریپری زینٹیٹوز کو بھجواتا ہے جس نے شہریت دینے یا نہ دیتے کا فیصلہ کرنا ہوتا ہے۔ فیصلہ آپ کے حق میں ہوا تو آپ کو اس تاریخ سے شہریت ملے گی جس تاریخ کو شہریت دستاویز بلجیم کے آفیشل گزٹ میں شائع ہوا ہو گا۔

شہریت سے متعلق اہم سوالات

س: میری پیدائش کے وقت میرا والد یا والدہ بلجیم کے شہری تھے کیا میں بھی بلجیئن شہری ہوں؟
ج: اگر آپ یکم جنوری 1967ءسے پہلے پیدا ہوئے ہوں اور آپ کے والد بیلجیئم کے شہری تھے تو آپ بھی بیلجیئم کے شہری ہوں گے۔ اگر آپ یکم جنوری 1967ءاور 31دسمبر 1984ءکے درمیان بلجیم میں پیدا ہوئے ہیں اور بلجیم کے شہری کے بیٹے ہیں تو بھی آپ شہریت کے حقدار ہیں۔
س: میں بیلجیئم میں پیدا ہونے کے باعث بیلجیئم کا شہری ہو سکتا ہوں؟
ج: اگر آپ بیلجیئم میں پیدا ہوئے ہوں اور 18سال کی عمر تک بے وطن رہے ہیں یعنی کسی اور ملک کی شہریت حاصل نہیں کی تو آپ بلجیم کی شہریت حاصل کر سکتے ہیں یا اگر آپ بیلجیئم میں پیدا ہوئے ہیں اور کسی اور ملک کے شہری رہے ہیں مگر 18سال کی عمر تک یہ شہریت کھو دی ہے تو بھی بیلجیئم کی شہریت کے حقدار ہیں۔
س: کسی بلجیئن شہری کے اپنانے پر میں بیلجیئم کا شہری بن سکتا ہوں؟
ج: جی ہاں! اگر آپ کو ایسے بلجیئن شہری نے اپنایا ہے جو کہ خود پیدائش سے ہی بیلجیئم کا شہری ہے تو آپ 18سال کی عمر پر شہریت حاصل کر سکیں گے۔
س: میرے والدین کو بیلجیئم کی شہریت ملے تو کیا میں بھی اس کا حقدار ہوں گا؟
ج: اگر آپ والدین کو شہریت ملتے وقت 18سال سے کم عمر کے ہیں تو آپ کو بھی شہریت مل جائے گی۔
س: کسی بلجیئن شہری سے شادی کے بعد مجھے بیلجیئم کی شہریت مل سکتی ہے؟
ج: اپنی بلجیئن بیوی یا شوہر کے ساتھ بیلجیئم میں کم از کم 3سال اکٹھے رہنے کے بعد آپ شہریت کےلئے اپلائی کر سکتے ہیں۔ آپ کی درخواست کے فیصلے تک اکٹھے رہنا ضروری ہے۔
س: بیلجیئم کی شہریت کن حالات میں کھو سکتی ہے؟
ج: 18سال کی عمر میں رضاکارانہ طور پر کسی اور ملک کی شہریت اختیار کر لی جائے تو بیلجیئم کی شہریت ختم ہو جاتی ہے۔ 1965ءکے بعد بیلجیئم سے باہر پیدا ہونے والے بلجیئن شہریوں کے بچے جوکہ بیلجیئم میں نہیں رہے 28سال کی عمر تک یہ شہریت خودبخود کھو بیٹھیں گے۔
س: کیا بیلجیئم کی شہریت دوبارہ مل سکتی ہے؟
ج: میونسپلٹی رجسٹرار کے پاس دوبارہ شہریت کے حصول کا اعلامیہ لکھ کر آپ دوبارہ شہریت حاصل کر سکتے ہیں۔ بشرطیکہ ریاست نے یہ شہریت خود نہ چھینی ہو اور اعلامیے سے پہلے کم از کم 12ماہ آپ بیلجیئم میں رہے ہوں۔ اس سلسلہ میں آپ ملک کے اندر ہیں تو لوکل میونسپلٹی کے رجسٹرار اور اگر باہر کسی ملک میں ہیں تو ایمبیسی سے رابطہ کریں گے۔ آپ کو شہریت واپس مل گئی تو آپ کے بچے خودبخود بیلجیئم کے شہری بن جائیں گے۔
س: میں کہاں سے معلوم کروں کہ مجھے شہریت کے کیس کےلئے کن کاغذات کی ضرورت ہے اور یہ کتنا لمبا عمل ہو گا؟
ج: اگر بلجیم میں رہائش پذیر ہیں تو اپنی میونسپلٹی سے معلومات حاصل کریں گے‘ کسی اور ملک میں رہائش ہے تو بیلجیئن ایمبیسی یا قونصلیٹ سے رابطہ کیا جا سکتا ہے۔

You may also like...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

error: Content is protected !!
%d bloggers like this: