کینیڈین امیگریشن سےمتعلق اہم سوالوں‌کے جوابات

Canada immigration
کینیڈا کی امیگریشن کے حوالے سے عمومی طور پر یہ سوالات ضرور پوچھے جاتے ہیں . ہم آپ لوگوں کی رہنمائی کے لئے ان کے جوابات یہاں‌دے رہے ہیں. امید ہے کہ اس کے بعد آپ کو کسی کنسلٹنٹ کی خدمات لینے کی ضرورت نہیں‌رہے گی.
س: طلب کردہ تصاویر کا اس قدر مخصوص سائز کیوں ہے؟
ج: آپ کی جمع کرائی گئی تصاویر آپ کے مستقل رہائشی کارڈ (Permanent resident card) پر لگنی ہیں جو کہ اندازاً بنک کریڈٹ کارڈ کے سائز کا پلاسٹک کارڈ ہو گا اس پر بڑے سائز کی تصاویز نہیں لگ سکتیں اور سائز میں ایک حد سے زیادہ چھوٹی تصاویر قابل شناخت نہیں رہ جاتیں۔
س: فارم پر رہائشی پتے کی کتنی تفصیلات لکھی جائیں؟
ج: 18 سال کی عمر کے بعد آپ جہاں بھی 6ماہ سے زائد رہے ہیں‘ ان جگہوں کے ایڈریس طلب کئے گئے ہیں جو کہ آپ مکمل لکھیں گے اور اس کیلئے ایک الگ شیٹ بھی استعمال کی جا سکتی ہے۔
س: کیا مجھے حصول ویزا کیلئے کسی ایجنٹ یا کنسلٹنٹ کی ضرورت ہے؟
ج: نہیں! آپ کو کینیڈین ویزا کیلئے ایجنٹ یا کنسلٹنٹ کی ضرورت نہیں ہے تاہم آپ رہنمائی یا مدد کیلئے کسی کی خدمات حاصل کرنا چاہیں تو ذاتی طور پر ایسا کر سکتے ہیں۔
س: میں پاکستانی شہری ہوں اور دبئی میں کام کر رہا ہوں‘ کیا یہ ممکن ہے کہ میں کینیڈا کی امیگریشن کیلئے اسلام آباد سے اپلائی کروں اور دبئی میں کینیڈین ہائی کمیشن میں انٹرویو ہو؟
ج: بحیثیت پاکستانی شہری آپ اسلام آباد سے اپلائی کر سکتے ہیں تاہم آپ کا انٹرویو وہیں ہو گا جہاں سے آپ اپلائی کریں گے۔ اگر آپ قانونی طور پر کم از کم ایک سال سے دبئی میں رہ رہے ہیں تو وہاں موجود کینیڈین ہائی کمیشن میں اپلائی کر سکتے ہیں تاکہ آپ کا انٹرویو وہیں ہو۔
س: میں انٹرویو کیلئے اپنی اہلیہ اور بچوں کو ساتھ لاؤں؟
ج: 18 سال سے کم عمر بچوں کو لانے کی ضرورت نہیں ہے 18 سال اور اس سے زائد عمر کے تمام لوگوں (جنہوں نے آپ کے ساتھ اپلائی کیا ہو) کو انٹرویو کیلئے لانا ہو گا۔
س: میں حاملہ ہوں اور اس دوران ایکسرے نہیں کرا سکتی‘ کیا مجھے میڈیکل ٹیسٹ سے مستثنیٰ قرار دیا جا سکتا ہے؟
ج: نہیں! مائیگریشن کیلئے ہر درخواست دہندہ کا میڈیکل ٹیسٹ ضروری ہے۔ حاملہ ہونے کی صورت میں آپ اپنے ڈاکٹر سے مشورہ کریں اگر کسی مخصوص کور کے ساتھ ایکسرے ممکن ہو تو ٹھیک ہے وگرنہ پوری فیملی (بچے سمیت) بچے کی پیدائش کے بعد میڈیکل ٹیسٹ کرائے گی۔ جس کیلئے بچے کے برتھ سرٹیفکیٹ کی تصدیق شدہ کاپی بمعہ ٹرانسلیشن‘ 2پاسپورٹ سائز تصاویر اور فیس کے ہمراہ سفارتخانے کو بھجوانا ہو گا جس پر بچے کیلئے میڈیکل فارم جاری ہو گا۔
س: ہمیں مستقل سکونتی ویزا ملنے کے بعد میری بیوی کو پچھلے ہفتے بچہ پیدا ہوا ہے کیا ہم کینیڈا اس کو ساتھ لے جا سکتے ہیں؟
ج: آپ کی فیملی کا کوئی ممبر ویزے اور میڈیکل کے بغیر ساتھ نہیں جا سکتا‘ حتیٰ کہ نوزائیدہ بچہ بھی‘ اس کیلئے ویزا اپلائی کریں۔ مستقل سکونتی ویزا ملنے کے بعد ہونے والی تبدیلیوں (مثلاً نئے بچے کی پیدائش‘ کسی کو گود لینے‘ بیوی کو طلاق دینے وغیرہ) کے بارے میں 15 روز کے اندر کینیڈین ایمبیسی کو مطلع کرنا ضروری ہے جو کہ آپ کو اس سلسلہ میں ضروری اقدامات کے بارے میں بتائے گی۔
س: امیگریشن کیلئے اپلائی کرنے کے بعد میری شادی ہوئی ہے‘ اب اپنی بیوی کو اس عمل میں کیسے شامل کروں؟
ج: آپ اس تبدیلی سے فوری طور پر ایمبیسی کو بذریعہ فیکس/ ڈاک مطلع کریں اور بیوی کی مکمل درخواست فارم‘ فیس اور تصاویر کے ہمراہ روانہ کریں۔ ویزا سیکشن کو اس کے ساتھ نکاح نامہ اور آپ کی اہلیہ کی جنم پرچی کی تصدیق شدہ کاپیاں (بمعہ ٹرانسلیشن) اور پولیس رپورٹ (جہاں بھی آپ کی اہلیہ 6ماہ سے زائد قیام پذیر رہیں وہاں وہاں کی) درکار ہونگی۔ اس کے ساتھ میڈیکل ٹیسٹ بھی ہو گا۔ واضح رہے کہ اپنی خاندانی حیثیت میں ہونے والی تبدیلی سے مطلع نہ کرنے کی صورت میں آپ کا مستقل سکونتی ویزا مسترد ہو سکتا ہے۔
س: ایک بار کینیڈا میں داخلے کے بعد میں واپس پاکستان آ سکتا ہوں؟
ج: جی ہاں! لیکن اس کیلئے آپ کو مستقل سکونتی کارڈ ملنے کا انتظار کرنا ہو گا۔ دوسری صورت میں آپ کو مخصوص ٹریولنگ دستاویز بنوانی ہو گی تاکہ واپسی پر دوبارہ کینیڈا میں داخل ہو سکیں۔
س: میرا ایک بڑا خاندان ہے مگر میرے تمام بچے کینیڈا مائیگریٹ نہیں ہونگے‘ کیا مجھے فارم میں تمام بچوں کے اندراج کی ضرورت ہے یا صرف انہی کے نام لکھوں جنہوں نے میرے ساتھ جانا ہے؟
ج: دو فارم ہیں‘ جن میں آپ نے بچوں کا اندراج کرنا ہے اور یہ دونوں مختلف ہیں۔ سپلیمنٹری فارم پر تمام بچوں کا اندراج کرنا ضروری ہے جبکہ ایپلی کیشن فارم پر بچوں کے نام دیں گے جن کو ویزا جاری ہو گا۔
س: میں سکلڈ ورکر کیٹگری کیلئے اپنے پوائنٹس کا تخمینہ لگا رہا ہوں‘ تعلیمی قابلیت کے پوائنٹس کا کیسے شمار کروں؟
ج: میٹرک پاس نہیں ہیں تو صفر پوائنٹ ملیں گے‘ 10 سال سیکنڈری تعلیم مکمل ہے یعنی کہ میٹرک پاس کیا ہے تو 5 پوائنٹس ہیں۔ فل ٹائم سٹوڈنٹ کے طور پر 12 سالہ تعلیم مکمل کی ہے یعنی کہ انٹر پاس ہیں تو 12 پوائنٹس کے حقدار ٹھہریں گے۔ گریجوایشن کی صورت میں 15 جبکہ ماسٹر ڈگری کے 20 نمبر ہیں اگر ڈاکٹریٹ کی ہو تو تعلیمی قابلیت کے کل 25نمبر ملیں گے۔ (یہ بھی ملاحظہ فرمائیں، ایکسپریس انٹری کا طریقہ کار)
س: مجھے فیملی سمیت مستقل سکونتی ویزا مل گیا ہے مگر میں ابھی کچھ عرصہ بعض گھریلو امور نمٹانے کیلئے پاکستان میں ہی رہنا چاہتا ہوں کیا میرے ویزے کی میعاد بڑھ سکتی ہے؟
ج: نہیں! ویزا کی میعاد نہیں بڑھ سکتی‘ آپ کو اس میعاد میں ایک بار کینیڈا جانا ہو گا جس کے بعد مستقل سکونتی کارڈ ملنے پر آپ واپس آ سکتے ہیں۔ آپ کا ویزا Expire ہو گیا تو آپ کو اور آپ کی فیملی کو امیگریشن کے پورے عمل سے دوبارہ گزرنا پڑے گا۔ ( کینیڈا کی سرکاری ویب سائٹ سے بھی استفادہ حاصل کریں)
س: کیا میں اپنی فیملی سے پہلے کینیڈا داخل ہو سکتا ہوں؟
ج: آپ بطور پرنسپل ایپلی کینٹ اپنے "Dependents" سے پہلے سفر کر سکتے ہیں مگر وہ آپ سے پہلے کینیڈا میں داخل نہیں ہو سکتے۔ وہ آپ کے ساتھ یا پھر آپ کے بعد سفر کر سکتے ہیں یعنی کہ آپ کا ویزا زائد المیعاد (Expire) ہوا تو آپ کے تمام اہلخانہ بھی متاثر ہونگے۔
س: میرا ویزا لگ گیا ہے اور میں مستقل سکونت کیلئے کینیڈا جانے والا ہوں وہاں رہنے اور کام کرنے کیلئے کیا تیاری کروں؟
ج: ٹھوس اور حقیقی معلومات کی روشنی میں وہاں رہائش‘ خصوصاً روزگار کیلئے لائحہ عمل تیار کریں۔ پہلے سے وہاں عزیز یا دوست موجود ہیں تو ان سے بات چیت کر کے یہ مرحلہ قدرے آسانی سے طے ہو سکتا ہے۔ آپ کو یہ جاننے کی ضرورت ہو گی کہ وہاں رہائش کیلئے کون سا علاقہ آپ کیلئے بہتر ہے جہاں بچوں کی تعلیم کیلئے سکول اور آپ کے روزگار کا بندوبست ہو سکے۔

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

1 تبصرہ

  1. چوہدری نیر نواز says:

    میں انگلینڈ جانا چاہتی ہوں

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Translate »
error: Content is protected !!
%d bloggers like this: