جاپان کے ورک ویزے اور مطلوب دستاویزات

جاپانی حکومت نے ورک ویزا کی کیٹگری بہت وسیع رکھی ہے جس میں سکلڈ ورکرز کے علاوہ بہت سے پیشے بھی شامل کئے گئے ہیں۔ ان میں چیدہ چیدہ پروفیسرز‘ آرٹسٹ‘ مذہبی کارکن‘ صحافی‘ انویسٹر/ بزنس مینجرز‘ لیگل/ اکاؤنٹنگ سروسز‘ میڈیکل سروسز‘ ریسرچرز‘ انسٹرکٹرز‘ انجینئرز‘ انٹرکمپنی سٹاف‘ سکلڈ لیبر شامل ہیں۔ اس کیٹگری میں قیام کی مدت دیکھتے ہوئے 1سال اور 3سال کے ویزے جاری کئے جاتے ہیں۔
i) پروفیسرز:
جو پروفیسرز یا اسسٹنٹ پروفیسرز تعلیمی مقاصد کیلئے ریسرچ یا تعلیم وتدریس کیلئے جاپان جانا چاہیں ان کو ان کے دورہ کی نوعیت دیکھتے ہوئے طویل المدتی قیام کا ویزا مل جاتا ہے۔ جس کیلئے جنرل دستاویزات کے علاوہ درج ذیل دستاویزات درکار ہوں گی۔
* جاپان میں مصروفیت کے حوالے سے کاغذات (ریسرچ کیلئے جا رہے ہیں تو متعلقہ ادارے کا لیٹر اور خط وکتابت کا ریکارڈ)۔
* تعلیم وتدریس کیلئے جانا مقصود ہے تو متعلقہ تعلیمی ادارے کی طرف سے جاری کردہ تقرری کا خط۔
* پاکستان میں اپنے موجودہ عہدہ کو ثابت کرنے کیلئے دستاویزات۔
* ریسرچ کیلئے جا رہے ہیں تو اس دوران اٹھنے والے اخراجات برداشت کرنے کی صلاحیت ثابت کرنے کیلئے بنک سٹیٹمنٹ اور جائیداد وغیرہ کے کاغذات۔
* اہلیتی سرٹیفکیٹ۔
ii ) آرٹسٹ:
آرٹس اور فنون لطیفہ سے تعلق رکھنے والے لوگ جو جاپان میں رہ کر پیشہ وارانہ سرگرمیاں جاری رکھنا چاہتے ہوں خواہ وہ فنکار‘ گلوکار‘ رائٹرز‘ کمپوزر یا فوٹوگرافرز ہوں ان کو بھی ورک ویزا جاری کیا جاتا ہے۔ اس ویزا کیلئے ورک ویزا کی شرائط پر ہی پورا اترنا ہو گا۔
iii) مذہبی کارکن:
عالمی مذہبی تنظیموں کے زیراہتمام مذہبی سرگرمیوں میں حصہ لینے کیلئے مشنری اور دیگر مذہبی کارکنوں کو ان کی جاپان میں مصروفیت کے مطابق طویل المدتی ویزا دیا جاتا ہے۔ اس کیلئے درج ذیل دستاویزات کی ضرورت ہوتی ہے۔
* غیر ملکی مذہبی تنظیم کی طرف سے جاری کردہ خط جس میں امیدوار کی حیثیت‘ جاپان میں متوقع قیام کی مدت اور سرگرمیوں کے بارے میں تفصیلات دی گئی ہوں۔
* بھیجنے والی تنظیم کے بارے میں دستاویزات (یعنی رجسٹریشن اور مقاصد وغیرہ سے متعلق)۔
* امیدوار کے بطور مذہبی کارکن کیریئر سے متعلق کاغذات۔
* گارنٹی لیٹر (اگر دستیاب ہو تو)۔
* امیگریشن اتھارٹی سے حاصل کردہ اہلیتی سرٹیفکیٹ (اگر دستیاب ہو تو)۔
iv )جرنلسٹس:
نیوز کوریج اور دیگر صحافتی امور کیلئے کسی غیر ملکی میڈیا گروپ سے کنٹریکٹ کے تحت صحافیوں اور فوٹوگرافرز کو ورک ویزا دیا جاتا ہے۔ ان میں ٹی وی اور ریڈیو یعنی الیکٹرانک میڈیا کے لوگ اور فری لانسرز بھی شامل ہیں۔ ویزے کیلئیمتعلقہ میڈیا گروپ کے ساتھ معاہدے کی کاپی‘ اپنی بطور جرنلسٹ پہچان کیلئے دستاویزات‘ جاپان میں سرگرمیوں کی تفصیل اور گارنٹی لیٹر وغیرہ ویزا درخواست کے ساتھ لگا کر اپلائی کیا جائے گا۔
v ) انویسٹرز/ بزنس مینجرز:
ایسے سرمایہ کار جو کہ جاپان کے ساتھ تجارت کرنا چاہیں یا وہاں سرمایہ کاری کے خواہشمند ہوں اور بزنس مینجرز جو غیر ملکی کمپنیوں کے بزنس کی مینجمنٹ کیلئے جاپان جانا چاہیں ان کو اس کیٹگری میں شامل کیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ سرمایہ کاری کیلئے جاپانی وزارت صنعت وتجارت کے قواعد وضوابط پورے کرنا ہوں گے۔ انویسٹرز کو ویزا کیلئے درج ذیل کاغذات کی ضرورت ہو گی۔
* بزنس پلان جس کے تحت سرمایہ کاری کرنے کا پروگرام ہو۔
* موجودہ بزنس کمپنی کی رجسٹریشن۔
* کمپنی کی نفع ونقصان کی سٹیٹمنٹ۔
* جاپان میں بزنس کے دوران مطلوبہ سٹاف کی تعداد کا تخمینہ۔
* آفس کہاں قائم کیا جائے گا اس کے حصول کیلئے جاپانی پارٹی سے طے ہونے والے معاہدہ کی کاپی۔
* جس کمپنی کے ساتھ زیادہ لین دین متوقع ہے وہ گارنٹی لیٹر دے گی۔
* امیگریشن اتھارٹی سے اہلیتی سرٹیفکیٹ حاصل کرنا ہو گا۔
vi) میڈیکل سروسز:
اس کیٹگری کیلئے ایم بی بی ایس ڈاکٹر‘ سپیشلسٹ اور ڈینٹسٹ وغیرہ اپلائی کر سکتے ہیں جو کہ جاپانی معیار پر پورے اترتے ہوں اور وہاں کسی ہسپتال یا کلینک کے ساتھ منسلک ہو کر لوگوں کو علاج معالجے کی سہولیات فراہم کر سکیں۔ ان امیدواروں کو ویزا درخواست کے ساتھ درج ذیل دستاویزات منسلک کرنا ہوں گی۔
* ملازمت آفر کرنے والی آرگنائزیشن کی تفصیلات۔
* جاب کیلئے طے شدہ معاہدہ۔
* امیدوار کی تعلیمی وپیشہ وارانہ اہلیت ثابت کرنے کیلئے اسناد کی کاپیاں۔
vii) انجینئرز:
جاپانی کمپنیوں کی طرف سے جاب آفرز پر تجربہ کار انجینئرز کو بھی 1 سال سے 2 سال تک کا ورک ویزا دیا جاتا ہے اس کیلئے اہلیت اور دستاویزات درج ذیل ہیں۔
* بلوانے والی کمپنی کی رجسٹریشن اور نفع ونقصان کی سٹیٹمنٹ کی کاپیاں۔
* امیدوار کے تعلیمی کاغذات کی فوٹو کاپیاں۔
* جاپانی کمپنی کے ساتھ ہونے والے معاہدے کی کاپی۔
* گارنٹی لیٹر اور اہلیتی سرٹیفکیٹ۔
viii) انسٹرکٹرز:
ایلیمنٹری سکولز‘ جونیئر وہائی سکولز‘ بلائینڈ سکولز اور خصوصی بچوں کے سکولز میں پڑھانے کیلئے بھی ورک ویزا جاری ہوتا ہے۔ اس کیلئے پہلے آپ کا جاپانی سکول کی انتظامیہ سے معاہدہ ہو گا پھر ویزا اپلائی کریں گے جس کیلئے درج ذیل کاغذات درکار ہوں گے۔
* متعلقہ سکول انتظامیہ/ آرگنائزیشن سے طے پانے والے معاہدہ کی کاپی۔
* تعلیمی سرٹیفکیٹس اور پیشہ وارانہ تربیت کی اسناد کی کاپیاں۔
* تجربہ کے سرٹیفکیٹس کی کاپیاں۔
* جاپان میں متوقع ملازمت کی مدت اور رہائشی بندوبست کی تفصیلات۔
* گارنٹی لیٹر اور امیگریشن اتھارٹی کا جاری کردہ اہلیتی سرٹیفکیٹ۔
ix ) انٹر کمپنی سٹاف:
ایسے کاروباری ادارے اور کمپنیاں جنہوں نے جاپان میں بھی اپنے دفاتر قائم کر رکھے ہوں وہ پاکستان سے وہاں اپنا سٹاف بھجوا سکتی ہیں۔ اس کیلئے بھی 3 سال تک کا ورک ویزا جاری ہوتا ہے۔ اس کیلئے مطلوبہ دستاویزات یہ ہیں۔
* پاکستان اور جاپان میں واقع دفاتر کے درمیان تعلق ثابت کرنے کیلئے رجسٹریشن اور لائسنس کی کاپیاں۔
* جاپانی برانچ کے نفع ونقصان پر مشتمل سٹیٹمنٹ۔
* امیدوار کی مذکورہ برانچ میں متوقع ذمہ داریوں سے متعلق کمپنی کا لیٹر۔
* مطلوبہ سیٹ پر کام کرنے کیلئے درکار قابلیت کے حوالے سے اسناد کی کاپیاں۔
* کمپنی کا گارنٹی لیٹر۔
* امیگریشن اتھارٹی کا اہلیتی سرٹیفکیٹ۔
x) سکلڈ لیبر:
جاپان کے کسی صنعتی ادارہ کی طرف سے ملازمت دیئے جانے پر ٹیکنیکل افراد کو ورک ویزا دیا جاتا ہے۔ اس کیلئے درکار کاغذات درج ذیل ہیں۔
* متعلقہ صنعتی ادارے یا کمپنی کی رجسٹریشن اور نفع ونقصان کی سٹیٹمنٹ کی کاپیاں۔
* ملازمت کیلئے مطلوبہ معیار اور قابلیت کی تفصیلات۔
* امیدوار کے تعلیمی وفنی سرٹیفکیٹس کی کاپیاں۔
* ملازمت کے معاہدہ کی کاپی۔
* گارنٹی لیٹر (کمپنی کی طرف سے جاری کیا گیا ہو)۔
* امیگریشن اتھارٹی کا اہلیتی سرٹیفکیٹ۔
xi) فنی تربیت:
جاپان سے ہیوی مشینری اور انجینئرنگ کا سامان منگوانے والی غیر ملکی کمپنیاں اپنے ٹیکنیکل سٹاف کو ٹریننگ کیلئے جاپانی کمپنیوں میں بھجواتی ہیں جس کیلئے ورک ویزا دیا جاتا ہے اس کیلئے درکار اہلیت اور دستاویزات درج ذیل ہیں۔
* تربیتی منصوبہ کی کاپی جس میں ٹریننگ کا مقام‘ دورانیہ اور نوعیت وغیرہ کی وضاحت کی گئی ہو۔
* ایسی دستاویز جو ظاہر کرے کہ امیدوار جس شعبہ میں کام کر رہا ہے اس کو اس میں مزید تربیت کی ضرورت ہے جس کیلئے جاپان جانا چاہتا ہے۔
* امیدوار کے فنی ڈپلومہ اور تعلیمی اسناد کی کاپیاں۔
* جاپانی کمپنی کی طرف سے تربیت کیلئے جاری کردہ خط کی کاپی۔
* جاپانی کمپنی کی رجسٹریشن کی کاپی۔
* گارنٹی لیٹر اور اہلیتی سرٹیفکیٹ کی کاپی۔

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

1 تبصرہ

  1. Zain akbar says:

    Aoa mein civil engineer hu 4 saal ka tajurba hai mjhy japan mein work krna hai kindly guide me

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Translate »
error: Content is protected !!
%d bloggers like this: